سوشل میڈیا پر تنقید،مصری دلہن کو اپنی شادی پر’سجدہ‘ کرنے کی وضاحت کرنا پڑ گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

مصرمیں شوبز سے منسلک شخصیات کے اسکینڈل معمول کی بات ہے۔ ایسے میں ایک نیا اسکینڈ سامنے آیا ہے۔

مصرمیں سوشل میڈیا پرفنکار اور موسیقار حسن شاکوش کی اہلیہ کو جمعہ کو ہونے والی شادی کی تقریب کے دوران سجدہ کرنے پرسوشل میڈیا پر تند وتیز تنقید کا سامنا ہے۔ آخر کار دلہن کو سوشل میڈیا صارفین کو وضاحت کرنا پڑی ہے۔

میلوں ٹھیلوں کے گلوکار حسن شاکوش کی اہلیہ ریم طارق نے پہلی بار سوشل میڈیا پر پیدا ہونے والے تنازع پر تبصرہ کیا۔ انہوں نے وضاحت کی ان کا عروسی جوڑے میں سجدہ کرنے کا مقصد’خدا کا شکر‘ بجا لانا تھا۔

انہوں نے کہا کہ خوشی میں ان کا سجدہ کوئی لمحہ فکریہ نہیں۔ انہوں نےسوشل میڈیا کی طرف سے شہرت اور ’ٹرینڈ‘ کی تلاش کا الزام مسترد کرتے ہوئے ’ای ٹی ان عربی‘ کے ایک پروگرام میں کہا کہ ’سجدہ کرنے کا مقصد سوشل میڈیا پر توجہ حاصل کرنا ہرگزنہیں‘۔

انہوں نے مزید کہا کہ "میں اپنے آپ سے عہد کر رہی تھی۔ جب میں عروسی لباس زیب تن کروں تو مجھے سجدہ ریز ہونا چاہیے۔ اپنے رب کا شکر ادا کرنا چاہیے کیونکہ اس نے مجھے نیکی کا بدلہ دیا ہے۔ وہ[شوہر] میری نظر میں دنیا کا بہترین شخص ہے۔"

گلوکار حسن شاکوش نے بھی اس بحث میں حصہ لیتے ہوئے تبصرہ کیا: "سجدہ شکر کو نماز کے سجدے سے نہیں ملانا چاہیے ۔"

ریم طارق نے حسن شاکوش کے ساتھ اپنی وابستگی کی تفصیلات بتاتے ہوئے بتایا کہ ’’ہم بچپن سے ہی پڑوسی تھے۔بعد میں ہم اس علاقے سے چلے گئے۔

دولہا نے کہا کہ "میں نے 3 سال پہلے اس سے ہاتھ مانگا تھا، لیکن اس کی منگنی ہوگئی، اور ہمارے رب نے مجھے عزت دی اور وہ میرانصیب مجھے دیا۔"

خیال رہے کہ سوشل میڈیا پرایک دلہن کو سفید عروسی لباس میں سجدہ کرتے دیکھا جا سکتا ہے۔ اس واقعے کو لے کرمصرمیں سوشل میڈیا پر سخت تنقید کی جا رہی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں