سعودی عرب: باپ دیکھتا رہ گیا، چار بچے سیلاب میں ڈوب کر جاں بحق

وادیوں اور چٹانوں کو پیدل عبور کرنے سے گریز کیا جائے: جنرل ٹریفک ڈیپارٹمنٹ کا انتباہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب میں ایک دل ہلا دینے والا واقعہ سامنے آیا ہے۔ والد کی آنکھوں کے سامنے اس کے چار بچے سیلاب میں ڈوب گئے اور وہ دیکھتا رہ گیا۔ والد خود بھی زخمی ہوگیا۔ جازان کے علاقے میں ’صبیا‘‘ گورنری میں گاؤں ’’ مشلحہ‘‘ میں آنے والے طوفان کا منظر اطراف میں کھڑے افراد میں سے ایک نے فلم بند کرلیا۔ اس ہولناک منظر کی ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ بچوں کو لے جانے والی کار تیز بارش کے باعث آنے والے پانی کے تیزبہاؤ کی زد میں آگئی اور ندی میں ڈوب گئی۔
ویڈیو میں کار ڈرائیور کی جانب سے صورت حال پر قابو پانے میں ناکامی واضح ہورہی ہے۔ موسلا دھار بارش میں گاڑی پانی میں بہ گئی اور اسی پانی میں ڈوب گئی۔ گاڑی میں سوار چار بچوں کی موت ہوگئی اور والد زخمی ہوگیا۔ ایک لڑے اور ایک لڑکی کی نعشیں نکال لی گئیں۔ دو لڑکوں کی تلاش شروع کردی گئی۔ وادی ابو حتارہ کے اس طوفان نے لوگوں کو افسردہ کردیا۔ اس علاقے میں پندرہ برس سے پانی آ رہاہے۔


دوسری طرف سعودی عرب کے جنرل ٹریفک ڈیپارٹمنٹ نے پانی کے بہاؤ کے دوران وادیوں اور چٹانوں کو عبور کرنے کے خلاف خبردار کردیا۔ محکمہ نے اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ پر کہا کہ وادیوں اور چٹانوں کو ان کے بہاؤ کے دوران عبور کرنا ایک سنگین غلطی ہے جو آپ کی زندگی کو خطرے میں ڈاتا ہے اور ٹریفک قوانین کی بھی خلاف ورزی ہے۔ محکمہ نے کہا کہ ٹریفک سے متعلق ہدایات کی خلاف ورزی پر 10 ہزار ریال جرمانہ کیا جائے گا۔ نیشنل سینٹر آف میٹرولوجی نے ارلی وارننگ سسٹم کے ذریعے عسیر، جازان، نجران، مکہ مکرمہ، الباحہ اور ریاض کے علاقوں میں موسم کی خرابی کا الرٹ جاری کیا ہے۔

Advertisement
مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں