مسجد الحرام کی تیسری سعودی توسیع میں نمازیوں آب زمزم کے 12 ہزار گیلن تقسیم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

صدارت عامہ برائے امور حرمین شریفین مسجد الحرام کی شمالی توسیع میں 120 مصلے تیار کیے گئے ہیں۔ مسجد الحرام کے اس توسیعی حصے میں فیلڈ سروسز کے نظام، منصوبوں، خودکار آلات اور انجینیرز کے انسانی کیڈر، تکنیکی ماہرین، مبصرین اور دیگر خدام ماہ صیام میں معمترین اور نمازیوں کے آرام و سکون کے لیے چوبیس گھنٹے کام کرتے ہیں۔

صدارت عامہ برائے امور حرمین نے داخلے اور باہر نکلنے کے لیے متعدد دروازے بھی مختص کیے ہیں۔ان میں مرکزی دروازہ شاہ عبداللہ جو گیٹ نمبر 100 ہے کے علاوہ گیٹ نمبر104، 106، 112، 173، 175، 176) شمالی جانب سے، دروازہ نمبر 114، 116، 119، 121 اور 123 مغربی جانب سے اور دروازہ نمبر 162، 165، 169 مشرقی جانب سے زائرین کی آمدو رفت کے لیے کھلے رہیں گے۔

اسسٹنٹ انڈر سکریٹری برائے شمالی توسیع برائے انتظامی امور، انجینیر ولید بن مطیع اللہ المسعودی نے وضاحت کی کہ مختص دروازے نمازیوں کی آمد میں سہولت فراہم کرتے ہیں اور انہیں گراؤنڈ فلواور پہلی منزل، میزانین اول، میزانین دوم میں موجود نماز کے ہالوں اور چھت تک لے جانے کا راستہ ہیں۔ پہلی بار مسجد الحرام کے اس حصے کو نمازیوں کے لیے 100 فی صد گنجائش کے ساتھ کھولا گیا ہے۔ مسجد کے اس حصے میں تین لاکھ نمازی با جماعت نماز ادا کرسکتے ہیں۔

المسعودی نے کہا کہ رمضان کے مقدس مہینے میں نمازیوں کی بڑی آمد کے ساتھ ایجنسی عازمین کی مسجد کے صحن تک آمد سے لے کر عمارت کے مرکزی یا ذیلی دروازوں سے ان کے داخلے تک خدمات کے معیار پر گہری نظر رکھتی ہے۔صدارت عامہ میں خصوصی ایجنسیوں اور تمام دستیاب جگہوں پر ایسکلیٹرز کی سہولت، 4800 بیت الخلاء جن میں سے 72 معذور افراد کے لیے ہیں مختص ہیں۔ اس کے علاوہ مسجد کے اس حصے میں نمازیوں کے لیے 22 ہزار قالین بچھائے گئے ہیں۔زمزم کے بابرکت پانی کے 12 ہزار سے زیادہ گیلن فراہم کیے جاتے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ شمالی توسیع میں فیلڈ کی صلاحیتیں توسیعی عمارت میں واقع مسجد الحرام میں عازمین کی نقل و حرکت کو آسان بنانے کے لیے پہلے سے تیار کیے گئے منصوبوں کی پیروی اور اپ ڈیٹ کرتی رہتی ہیں تاکہ نماز آسانی اور سہولت کے ساتھ ادا کی جا سکے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں