نیتن یاہو ہماری قومی سلامتی کے لیے خطرہ ہیں: اسرائیلی اپوزیشن لیڈر

عدلیہ اصلاحات کو مسترد کرنے پر وزیر دفاع گیلنٹ کو برطرف کرنے پر یائر لاپڈ کا رد عمل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

اتوار کو اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاہو نے وزیر دفاع یوو گیلنٹ کو عدالتی ترامیم کو مسترد کرنے کی وجہ سے ان کے عہدے سے برطرف کر دیا تھا۔ اپنی برطرفی کے بعد مسٹر گیلنٹ نے کہا ہے کہ "ریاست اسرائیل کی سلامتی میری زندگی کا مشن تھا اور ہمیشہ رہے گا۔"

گیلنٹ کی برطرفی کے فیصلے پر تبصرہ کرتے ہوئے اسرائیلی اپوزیشن کے رہنما یائر لاپڈ نے کہا ہے کہ نیتن یاہو قومی سلامتی اور اسرائیل کی سلامتی کے لیے خطرہ ہیں۔

اسرائیلی نیشنل یونٹی کولیشن نے یہ بھی کہا کہ اس سے قبل کبھی بھی وزیر دفاع کو سلامتی کے خطرے سے خبردار کرنے پر برطرف نہیں کیا گیا۔ نیتن یاہو اسرائیل کو کھائی میں پھینکنے کے لیے پرعزم ہیں۔

سابق وزیر دفاع بینی گانٹز نے کہا ہے ہمیں ایک حقیقی خطرے کا سامنا ہے اور نیتن یاہو نے خود کو اسرائیل کی سلامتی کے سامنے رکھا ہے۔

اسرائیلی اخبار ’’ یدیعوت احرونوت‘‘ کے مطابق اسرائیلی مظاہروں کے رہنماؤں نے اپنے رد عمل میں کہا ہے کہ نیتن یاہو ایک حقیقی آمر کی طرح برتاؤ کر رہے ہیں۔ رہنماؤں نے تل ابیب میں حکومتی مرکز کے علاقے میں مظاہروں کی تنظیم کا اعلان کردیا۔

حکومتی موقف

دوسری جانب اسرائیلی سلامتی امور کے وزیر ایتمار بن گویر نے کہا ہے کہ وزیر دفاع اپنے کل کے خطاب کے بعد اپنے عہدے پر رہنے کے حقدار نہیں تھے ۔ وزیر دفاع برطرف کرنے کا نیتن یاہو کا فیصلہ درست ہے اورمیں ان کی حمایت کرتا ہوں۔

مقبول خبریں اہم خبریں