عقبہ شعار میں زائرین کی بس کو خوفناک حادثہ کی تفصیلات جاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے جنوب مغربی ریجن عسیر میں ’عقبہ شعار‘ کے پہاڑی سلسلے میں عمرہ زائرین کی بس کو پیش آنے والے حادثے کی مزید تفصیلات سامنے آئی ہیں۔ اس المناک واقعے میں 20 افراد لقمہ اجل بن گئے تھے۔

تفصیلات کے مطابق عقبہ شعار روڈ جس پر یہ حادثہ پیش آیا وہ اس علاقے کی اہم مصروف شاہراہ ہے جو عسیر کے پہاڑی علاقوں کو ریاض، نجران، ساحلی علاقوں جازان، الباحہ اور مکہ مکرمہ کے ساتھ ملانے کا اہم ذریعہ ہے۔

ٹوریسٹ گائیڈ اور عسیر کی تاریخ میں دلچسپی رکھنے والے فہد المقبل نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو بتایا کہ عقبہ شعار کا قیام سنہ 1980ء میں عمل میں لایا گیا تھا۔ عقبہ شعار سڑک کی کل لمبائی تقریباً 14 کلومیٹر ہے۔ اس میں 32 پل اور 11 سرنگیں شامل ہیں۔

عقبة شعار .
عقبة شعار .

انہوں نے وضاحت کی کہ عقبہ وہ واحد سڑک ہے جو نقل و حمل کی بسوں اور ٹرکوں کے لیے مختص کی گئی ہے جو مملکت کے اہم علاقوں کے درمیان پیٹرولیم اور تعمیراتی سامان اور ہر قسم کا تجارتی سامان لے جانے کا اہم روٹ ہے۔

فہد المقبل نے کہا کہ عقبہ پر دباؤ کو کم کرنے کے لیے ضروری ہے کہ نخلین عقبہ کے نفاذ میں تیزی لائی جائے جو اس کے شمال میں واقع ہے، اسی طرح جنوبی سمت میں کچی سڑک ہے۔

قابل ذکر ہے کہ گذشتہ روز عمرہ کی ادائیگی کے لیے سعودی شہریوں اور دوسرے ممالک کے باشندوں کو لے جانے والی بس عقبہ میں حادثے کا شکار ہو گئی تھی جس میں 20 افراد جاں بحق اور 29 زخمی ہو گئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں