ترکیہ میں زلزلہ متاثرین کو امداد فراہم کرنے والے ممالک میں سعودی عرب سب سے آگے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اقوام متحدہ نے سعودی عرب کو ترکیہ میں زلزلہ متاثرین کی امداد میں پیش پیش رہنے کا کریڈٹ دیا ہے۔ عالمی ادارے نے بھی سعودی عرب کی جانب سے ترکیہ کی امداد کا اعتراف کیا ہے۔

اقوام متحدہ کے دفتر برائے انسانی امور (OCHA) نے ترکیہ میں زلزلہ متاثرین کی فوری مدد کرنے والے ممالک کا شکریہ ادا کیا ہے۔ ’اوچا‘ کا کہنا ہے کہ زلزلے کے بعد امدادی ادارے کی طرف سے ایک ارب ڈالر کی امداد کی اپیل کی گئی تھی جس کے جواب میں امداد دینے والے ممالک کی طرف سے 26 کروڑ 8 لاکھ ڈالر جمع ہوئے۔ ادارے کا کہنا ہے کہ امداد دینے والے ممالک میں سعودی عرب سر فہرست ہے۔

’اوچا‘ کے ترجمان جینز لایرکے نے تصدیق کی کہ اپیل کو 27 فیصد فنڈز فراہم کیے گئے اور یہ کہ سب سے زیادہ عطیہ دہندگان میں مملکت سعودی عرب، امریکا، کویت، یورپی کمیشن اور اقوام متحدہ کے ہنگامی فنڈ تھے۔

انہوں نے وضاحت کی کہ یہ امداد ترک حکومت کی قیادت کی طرف سے امداد کی اپیل کا جواب ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ دو ماہ قبل آنے والے زلزلے سے نو ملین افراد براہ راست متاثر ہوئے تھے، جبکہ تیس لاکھ لوگ بے گھر ہوئے تھے۔

انہوں نے کہا کہ "اقوام متحدہ کے انسانی ہمدردی کے ادارے 4.1 ملین سے زیادہ لوگوں تک خوراک کے سوا دیگر امداد پہنچا چکے ہیں اور 30 لاکھ افراد کو ہنگامی خوراک کی امداد فراہم کی گئی ہے، جب کہ سات لاکھ سے زیادہ لوگوں کو اپنے رہائش گاہوں کو بہتر بنانے کے لیے مدد ملی ہے، جن میں خیمے، ریلیف ہاؤسنگ یونٹس شامل ہیں۔

ترجمان نے نشاندہی کی کہ ترکیہ میں وزارت صحت کو 4.6 ملین ویکسین کی خوراک، 16 موبائل ہیلتھ کلینکس، ادویات اور طبی سامان کے علاوہ تولیدی صحت اور صدمے اور زخموں کے علاج کے لیے مدد فراہم کی گئی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں