مراکشی بچے ریان کی کہانی کا پھر اعادہ، شام میں بھی بچہ کنویں میں گرگیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

مراکش میں یکم فروری 2022 کو ایک بچے ریان کی گہرے کنویں یا پانی کی گزر گاہ کے کھلے ہوئے مین ہول میں گر کر ہلاکت نے دنیا کو افسردہ کردیا تھا۔ تاہم اس واقعہ کے بعد بچوں کے پانی کے کنووں میں گرنے کے واقعات کئی مرتبہ پیش آ چکے ہیں۔

ایسا ہی ایک واقعہ شام کے شہر کوبانی کے گاؤں دیھابان میں بھی پیش آگیا۔ دیھابان میں 8 سالہ بچہ 120 میٹر گہرے کنویں میں گر گیا۔ بچے کو بچانے کی کوششیں کئی گھنٹے جاری رہیں۔

سیریئن آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس کے مطابق یہ بچہ کنویں کے اندر 40 سے 50 میٹر گہرائی میں پھنس گیا تھا۔ بچاؤ کرنے والے افراد کے پاس جدید آلات کی کمی تھی۔ ان کے پاس صرف قدیم اوزار تھے جو کنویں کی کھدائی کے لیے استعمال کیے جاتے ہیں۔

ایک ویڈیو کلپ میں دکھایا گیا ہے کہ درجنوں دیہاتی افراد اور امدادی ٹیمیں جمع ہو کر بچے کو کنویں میں بھرے پانی سے نکالنے کی کوشش کر رہی ہیں۔

یاد رہے کہ مراکش میں ریان نامی پانچ سالہ بچہ یکم فروری 2022 کو کنویں میں گر گیا تھا جس کے بعد اسے ریسکیو کی شدید کوششیں کی گئیں، تاہم یہ حادثہ 5 فروری کو اس کی موت کے اعلان کے ساتھ ہی ختم ہو گیا۔ سانحہ شمالی مراکش کے صوبہ شفشاون کے گاؤں اغران میں اس وقت پیش آیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں