سعودی عرب: الاحساء کےایک اسکول میں بچے کو بند کیے جانے کے واقعےکی تحقیقات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی عرب میں سماجی رابطوں کی ویب سائٹس پروائرل ہونےوالی ایک ویڈیومیں الاحساء گورنری میں ایک اسکول کے اندر ایک طالب علم کو مبینہ طور پر یرغمال بنائے جانے کے واقعے کی تحقیقات شروع کردی گئی ہیں۔

ویڈیوفوٹیج بنانے والےشخص نے انکشاف کیا ہے کہ ’اگر اس نے روتے ہوئے طالب علم کی آواز نہ سنی ہوتی تو شاید بچہ بدستور اندر بند رہتا اور کسی کی توجہ اس طرف نہ جاتی‘۔ انہوں نے کہا کہ طالب علم اسکول کے بالائی کلاس رومز میں سے ایک کی کھڑکی سے باہر دیکھنے کی کوشش کر رہا تھا۔

انہوں نے مزید کہا کہ طالب علم اسکول کی کھڑکی سے دیکھ رہا تھا۔ بچے کا کہنا تھا کہ کمرے کا دروازہ باہر سے بند ہے اور میری پکار پر کسی نے

دروازہ نہیں کھولا۔

واقعے کی تحقیقات

درایں اثنا الاحساء میں جنرل ایڈمنسٹریشن آف ایجوکیشن نے اس واقعے کی تحقیقات کا آغاز کردیا ہے اور سوشل میڈیا پر گردش کرنے والی ویڈیو کی تصدیق کے لیے ایک خصوصی کمیٹی تشکیل دے دی ہے۔

اپنے بیان میں انتظامیہ نے کہا ہے کہ یہ واقعہ مشرقی سعودی عرب کے شہر ہفوف کے ایک اسکول میں پیش آیا۔ انتظامیہ اس حوالے سے ضروری قانونی اقدامات کرے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں