جدہ: یمنی باشندوں کا معذور بچوں کو گدا گری کےلیے استعمال کرنے کا انکشاف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سعودی عرب کے مغربی علاقے جدہ میں پولیس نے یمن سے تعلق رکھنے والے متعدد افراد کو گرفتار کیا ہے جن الزام ہے کہ وہ معذوری سے دوچار بچوں کو مساجد اور کاروباری مراکز کے باہر گداگری کے مکروہ دھندے کے لیے استعمال کررہے تھے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ ملزمان نے ایک مکان اس مقصد کے لیے حاصل کررکھا تھا جہاں سے گداگری کے انتظامات کیے جاتے تھے۔

اس حوالے سے جنرل سکیورٹی نے وضاحت کی کہ گرفتار افراد نے ان کے بیانات سننے کے بعد اعتراف کیا کہ وہ پیشگی منصوبہ بندی کے تحت بھیک مانگنے کا دھندہ کرتے تھے۔ انہوں نے گداگری کے لیے معذور بچوں کا استحصال کرنا شروع کررکھا تھا اور ان کا استعمال کرتے ہوئے عوام سے پیسے بٹورتے تھے اور ان سے رقم وصول کرتے تھے۔

پولیس حکام کا کہنا ہے کہ گرفتار افراد کے خلاف ابتدائی تفتیشی عمل مکمل کیا جا رہا ہے اور انہیں پبلک پراسیکیوشن کے حوالے کیا جائے گا۔

سعودی عرب میں گداگری کی سزا

سعودی عرب میں سرکاری سطح پر گداگری کرنے یا اس مکروہ دہندے کے لیے دوسروں کو استعمال کرنا قابل سزا جرم ہے مملکت میں بھیک مانگنے کی تمام شکلوں کو ممنوع قرار دیا گیا ہے۔ بھیک مانگنا،اس کی ترغیب دلانا یا بھکاری کو پناہ اور مدد فراہم کرنے پر چھ ماہ قید اور پچاس ہزار ریال جرمانہ کی سزا ہے۔

اس دھندے کو منظم انداز میں ایک گروپ کی شکل میں چلانے پر ایک سال قید اور ایک لاکھ ریال جرمانہ یا دونوں سزائیں ایک ساتھ دی جا سکتی ہیں۔ غیرسعودی ملزمان کو سزا پوری ہونے کے بعد ملک بدر کیا جائے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں