مصرمیں اسپتال کے گیٹ پرنومولود کی موت کے واقعےکی اعلیٰ سطح پرتحقیقات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصرمیں ایک اسپتال کے گیٹ پرایک خاتون کے بے بسی کے عالم میں بچے کو جنم دینے اور نومولود کی وفات کے واقعے کی تحقیقات شروع کر دی گئی ہے۔

یہ افسوس ناک واقعہ گذشتہ دنوں مصر کی القلیوبیہ گورنری میں پیش آیا تھا جہاں ایک سرکاری اسپتال کی انتظامیہ نے ایک خاتون کو 1600 مصری پاؤنڈ ادا نہ کرنے پرسرجری کے لیے داخل ہونے سے روک دیا تھا۔ اس پر بے بس خاتون نے اسپتال کے گیٹ پربچی کو جنم دیا اور بچہ پیدائش کے کچھ دیر بعد وفات پا گیا۔

خاتون کے شوہر نے قلیوبیہ گورنری کے کفر شکر سپیشلسٹ اسپتال کی انتظامیہ کے خلاف پولیس میں رپورٹ درج کرائی، جس میں اس پر الزام لگایا گیا کہ اس نے رقم کی ادائی کے بغیر اس کی بیوی کو بچے کی پیدائش کے لیے آپریٹنگ روم میں داخل کرنے سے انکار کردیا تھا۔

شوہر نے وضاحت کی کہ اس کے پاس پیسے نہیں تھے جس کی وجہ سے اس کی بیوی نے اسپتال کے استقبالیہ دروازے پر بچے کو جنم دیا۔اس کی وجہ سے بچہ زمین پر گر گیا اور اس کی موت ہوگئی۔

وزارت صحت میں خصوصی طبی مراکز کے سیکرٹریٹ کی چیئرپرسن مہا ابراہیم نے کفر شکر اسپتال کے ڈائریکٹر کو برطرف کرنے کے بعد نیا ڈائریکٹر مقرر کیا ہے اور غفلت کے مرتکب عملہ کے خلاف کارروائی شروع کردی گئی ہے۔

اس واقعہ کی جانچ کے لیے ایک انکوائری کمیٹی بھی بنائی گئی ہے۔ وہ واقعہ کی تحقیقات کرکے اعلیٰ حکام کو اس کی رپورٹ پیش کرے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں