سفارتخانہ کھولنے کی بات چیت کے لیے تکنیکی وفد جلد ریاض جائے گا: ایران

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب اور ایران کے درمیان گزشتہ ماہ ہونے والے معاہدے پر عمل درآمد کا سفر جاری ہے۔ ایرانی وزارت خارجہ نے اعلان کیا ہے کہ سعودی تکنیکی وفد کے دورہ ایران کے بعد جلد تہران کا ایک وفد بھی ریاض کا دورہ کرے گا۔

ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان ناصر کنعانی نے آج پیر کو ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ ریاض میں سفارت خانہ دوبارہ کھولنے پر بات کرنے کے لیے ایک تکنیکی وفد چند دنوں کے اندر سعودی عرب کا دورہ کرے گا۔

ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان ناصر کنعانی
ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان ناصر کنعانی

انہوں نے مزید کہا کہ دونوں ملکوں کے درمیان سفیروں کی تقرری کے لیے ابتدائی اقدامات کر لیے گئے ہیں اور مزید پیش رفت جاری ہے۔

یمن کی جنگ بندی

یمن میں جنگ بندی کے معاملہ پر بات کرتے ہوئے ناصر کنعانی نے کہا امید ہے کہ خطے میں رونما ہونے والی تبدیلیاں ایک پائیدار سیاسی عمل لائیں گی اور یمن میں مسلسل جنگ بندی میں مددگار ثابت ہوں گی۔ انہوں نے کہا ایران یمنیوں کے درمیان جنگ بندی میں توسیع کا حامی ہے۔

اقوام متحدہ کی ثالثی میں ہونے والی جنگ بندی کی مدت دو توسیعوں کے بعد گزشتہ اکتوبر کی دوسری تاریخ کو ختم ہو گئی تھی۔ تمام یمنی فریق اس کے بعد اس جنگ بندی کی تجدید کے لیے کسی معاہدے پر نہیں پہنچ سکے ہیں۔

سعودی اور ایرانی وزرا خارجہ فيصل بن فرحان حسين امير عبداللهيان
سعودی اور ایرانی وزرا خارجہ فيصل بن فرحان حسين امير عبداللهيان

واضح رہے سعودی عرب اور ایران میں تعلقات کی بحالی کے بعد دو روز قبل سعودی وفد تہران پہنچا تھا جس کا مقصد معاہدہ پر عمل درآمد کرنا تھا۔

دونوں ملکوں نے گذشتہ مارچ 2023 میں بیجنگ میں 2016 سے منقطع تعلقات کو دوبارہ شروع کرنے اور دو ماہ کے اندر دونوں سفارت خانوں کو دوبارہ کھولنے پر اتفاق کیا تھا۔

دریں اثنا ایرانی خبر رساں ایجنسی "تسنیم" نے اعلان کیا ہے کہ ایک ایرانی تکنیکی وفد ریاض میں سفارت خانے کو دوبارہ کھولنے کی تیاری کے لیے کل ریاض جائے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں