جنین میں جھڑپیں اور 5 افراد کی گرفتاری اور درجنوں آباد کاروں کا الاقصیٰ پر دھاوا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

اسرائیلی فورسز نے آج منگل کو علی الصبح مغربی کنارے کے جنین پناہ گزین کیمپ پر دھاوا بول دیا جس کے بعد فلسطینی نوجوانوں کے ساتھ جھڑپیں شروع ہو گئیں۔

العربیہ اور الحدث کے نامہ نگار نے بتایا کہ اسرائیلی فورسز نےگذشتہ برس ستمبر میں وادی اردن میں اپنے والد کے ساتھ مل کر ایک آپریشن کے الزام میں ایک نوجوان مہر ترکمان اور چار دیگر افراد کو گرفتار کر لیا۔

اسرائیلی فوج کے ریڈیو نے گرفتاریوں کے بعد جنین سے خصوصی دستوں کے انخلاء کی تصدیق کی ہے۔

پرانے یروشلم میں العربیہ اور الحدث کے نامہ نگاے نے مغربی گیٹ یہودی آبادکاروں کے دھاووں کی تصدیق کی۔

اسرائیلی فورسز نے یروشلم کے پرانے شہر میں اپنے اقدامات مزید سخت کر دیے۔ نوجوانوں کو مسجد اقصیٰ میں داخل ہونے اور وہاں فجر کی نماز ادا کرنے سے روک دیا گیا جب کہ درجنوں آباد کاروں نے مسجد کے صحنوں پر دھاوا بول دیا۔

پولیس کی طرف سے سخت حفاظتی انتظامات کے درمیان آباد کاروں نے گروپوں میں مسجد اقصیٰ میں دراندازی کی۔پولیس نے فلسطینی نمازیوں کو آباد کاروں کی دراندازی کے راستے سے ہٹا دیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں