بچے خطرناک تفریحی سرگرمیوں میں حصہ لینے سے باز رہیں: سعودی حکومت کا انتباہ

تفریحی سرگرمیوں میں احتیاط برتی جائے، سائیکل 12 سال سے کم عمر بچوں کو کرایہ پر نہ دی جائیں: پبلک پراسیکیوشن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی پبلک پراسیکیوشن نے 12 سال سے کم عمر کے بچوں کو سائیکل کرائے پر دینے کے خلاف خبردار کیا ہے اور بچوں کے حقوق کو یقینی بنانے کے لیے تفریحی سرگرمیوں میں حصہ لینے کے حوالے سے کئی احتیاطوں پر زور دیا۔

پبلک پراسیکیوشن نے جمعہ کو ایک بیان میں کہا بچے کے لیے ایسی تفریحی سرگرمیوں میں حصہ لینا ممنوع ہے جو اس کی حفاظت یا صحت کو خطرے میں ڈالتی ہیں۔ ضرورت پڑنے پر بچوں کو جھولنے والی نشستوں اور دیگر کھیلوں کے لیے حفاظتی بیلٹ فراہم کرنا انتہائی ضروری ہے۔

بیان میں مزید کہا گیا کہ گیمز اس بچے کی عمر اور صلاحیتوں کے مطابق ہونے چاہئیں جو انہیں استعمال کرتا ہے۔ ہر گیم کے ساتھ ایک معلوماتی پلیٹ لگائی جانی چاہیے۔ اس معلوماتی پلیٹ پر گیم کھیلنے والوں کے لیے تمام ضروری شرائط درج ہونا چاہیں۔ گیم کھیلنے کی اہلیت کے لیے مناسب عمر، ایک وقت میں استعمال کی مخصوص تعداد، دیگر ضروری معلومات اور کھیلنے کا طریقہ اس پلیٹ پر لکھا ہونا چاہیے۔

بیان کے مطابق بچوں کو کرایہ پر سائیکلیں دینے والے 12 سال سے کم عمر کے کسی کو بھی سائیکل کرائے پر نہیں دے سکتے بصورت دیگر وہ دوسروں اور بچے کو ہونے والے نقصان کے خود ذمہ دار ہوں گے۔ 12 سال سے کم عمر کے بچے عوامی سڑک پر سائیکلوں پر سوار نہیں ہوسکتے۔

پبلک پراسیکیوشن نے کہا کہ جب بھی ممکن ہو بچوں کے کھیلوں کو حفاظتی لوازمات جیسے سائیکلوں کے اطراف میں اضافی پہیے، سر کے ہیلمٹ، اور گھٹنے اور کہنی کی حفاظت کرنے والی سپورٹ کے ساتھ کھیلا جانا چاہیے۔ پبلک پراسیکیوشن نے واضح کیا کہ اس قانون کی دفعات کی خلاف ورزی کرنے والوں پر مقدمات چلائے جائیں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں