یمن: نماز عید کے خطبہ پر اختلاف، ایک خطیب کو قتل کردیا گیا

مسلح افراد نے گھر واپس جاتے ہوئے شیخ عبداللہ البانی کی گاڑی کو روکا اور فائرنگ کردی، بیٹے اور گارڈز زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

یمن میں مشرقی گورنری ’’شبوہ‘‘ کے ضلع ’’بیحان‘‘ کے ایک علاقے میں نماز عید کا خطبہ دینے والے ایک خطیب کو قتل کردیا گیا۔ نماز کے خطبہ دینے کے اختلاف پر شیخ عبد البانی کو خون میں نہلا دیا گیا۔ نماز عید کے بعد گھر واپس جاتے ہوئے مسلح افراد نے شیخ عبد اللہ البانی کی گاڑی کو روکا اور انہیں فائرنگ کرکے مار دیا۔ ان کے بچے اور دیگر افراد زخمی ہوگئے۔

شیخ عبد اللہ پر ایک گولی چلائی گئی جس سے وہ موقع پر ہی جاں بحق ہوگئے۔ ان کے محافط ، متعدد سکیورٹی اہلکار اور کار میں ان کے ساتھ سوار بچے بھی زخمی ہوگئے۔

ذرائع نے بتایا کہ نماز عید کی ادائیگی سے قبل البانی اور دوسروں کے درمیان یہ تنازع پیدا ہوا کہ عید الفطر کا مبارک خطبہ کون ادا کرے گا اور نمازیوں کی امامت کون کرے گا۔ تنازع لڑائی میں بدل گیا۔ دونوں فریقوں کے درمیان خطرناک صورتحال پیدا ہوگئی اور بیہان میں ایئرپورٹ کے علاقے میں عید کی نماز کی جگہ کے قریب فائرنگ کا تبادلہ ہوگیا۔

شیخ عبد اللہ کے منبر پر چڑھنے کے بعد بھی مسلح افراد میں کشیدگی جاری رہی۔ اس کے بعد گھات لگا کر شیخ عبد اللہ پر حملہ کردیا گیا اور البانی کو براہ راست نشانہ بنایا گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں