شام میں دہرے قتل کی لرزہ خیز واردات، باپ نے دو بٹیوں کو قتل کر کے خودکشی کر لی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شام کے علاقے حلب میں قتل کی ایک بھیانک واردات کی تفصیلات سامنے آئی ہیں۔ اس واردات کی تفصیلات میں بتایا گیا ہے کہ ایک شخص نے اپنی دو کم سن بچیوں کو قتل کرنے کے بعد انہیں دفن کیا اور اس کے بعد خود کو بم دھماکے سے اڑا دیا۔

شمالی شام کے شہر حلب کے عوام گذشتہ روز یہ خبر سن کر ششدر رہ گئے جب انہیں پتا چلا کہ اسی علاقے کے ایک سفاک والد نے اپنی دو بچیوں کو قتل کرکے خود کشی کر لی ہے۔

اس واقعے کی تفصیلات شام کی وزارت داخلہ کی طرف سے شائع کی گئی ہیں جن میں بتایا گیا ہے کہ حلب گورنری پولیس کمانڈ سے ایک رپورٹ موصول ہوئی ہے کہ حلب کے علاقے تل شغیب میں اپنے گھر میں حسن جدعو نامی شخص نے اپنی دو بیٹیوں کو قتل کر دیا۔ قتل کے بعد اس نے بچیوں کی لاشیں گھر کے قریب ہی دفن کر دی تھیں۔

قاتل نے خود کو بم دھماکے سے اڑا دیا

فوری طور پر حلب میں کریمنل سکیورٹی برانچ کی ٹیم شکایت کے مقام پر پہنچی۔ گھر پہنچنے پر پتا چلا کہ باپ نے اپنی دو بیٹیوں ھبا اور حلا کو دستی بم پھینک کر یرغمال بنا لیا۔ اس نے دھمکی دی کہ اگر کوئی اس کے قریب آیا تو وہ اپنی بیٹیوں کے ساتھ دھماکہ کر دے گا۔

اس نے فرار ہونے کی کوشش کی اور پولیس پر تین بموں سے حملہ کیا، جس کے نتیجے میں ان میں سے ایک دھماکہ ہوا، جس سے اس کی دو بیٹاں وہ خود اور متعدد سکیورٹی اہلکار زخمی ہو گئے۔

وزارت نے بتایا کہ زخمیوں کو حلب کے یونیورسٹی ہسپتال میں علاج کے لیے لے جایا گیا اور چند گھنٹوں بعد بچیوں کے قاتل والد کی ہسپتال میں موت واقع ہو گئی۔

سکیورٹی حکام نے گھر کی تلاشی لی، تلاشی کے دوران 14 سال کی سیدرہ کی لاش گھر کے صحن میں دفن پائی گئی۔ مقتول بچیوں کی ایک بہن نورا نے بتایا کہ سدرہ کے قتل کے بعد اس کی ایک دوسری بہن جس کی عمر تیرہ سال تھی کو قتل کر کے اسے بھی گھر کے صحن میں دفن کیا گیا۔ اس کی شناخت المیس کے نام سے کی گئی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں