شام کی عرب لیگ میں واپسی کے امکانات، وفود کی ملاقاتوں کا سلسلہ جاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

کئی سال تک رکنیت کی معطلی کے بعد شام کی عرب لیگ میں واپسی کے امکانات روشن ہونا شروع ہوگئے ہیں۔

‘المجلہ’ میگزین نے عرب ممالک کے وزرائے خارجہ کے اجلاسوں میں شامی وفود کی دوبارہ شرکت کے فیصلے کا مسودہ شائع کیا ہے۔ شامی وفود کو عرب لیگ سے وابستہ تنظیموں کے اجلاسوں میں شرکت کا موقع دیا جا رہا ہے۔ یہ وفود آج قاہرہ میں عرب وزرائے خارجہ کے اجلاس سے قبل ملاقاتیں کررہے ہیں۔ توقع ہے کہ آج کے اجلاس میں شام کی عرب لیگ میں واپسی کا حتمی فیصلہ کیا جائے گا۔

المجلہ میگزین کے مطابق عرب وزرائے خارجہ عرب لیگ اور اس سے وابستہ تمام تنظیموں اور ایجنسیوں کے اجلاسوں میں شامی وفود کی شرکت دوبارہ شروع کرنے کا فیصلہ کریں گے۔

مسودے میں بین الاقوامی قراردادوں کے مطابق مرحلہ وار اصول کے تحت شام کے بحران کو بتدریج حل کرنے کے لیے عملی اور موثر اقدامات کرنے کی ضرورت پر بھی زور دیا گیا ہے۔

شام کے وزیر خارجہ فیصل المقداد کو قرارداد کے مسودے کے عناصر کے مواد سے عرب وزرائے خارجہ کے رابطوں کے ذریعے آگاہ کیا گیا جنہوں نے حالیہ ہفتوں میں عرب لیگ کے اندر اتفاق رائے تک پہنچنے کے لیے موقف کو مربوط کرنے کے لیے متعدد ممالک کا دورہ کیا اور ان کے اعلیٰ عہدیداروں سے ملاقاتیں کیں۔

مسودے میں شام کی سلامتی اور استحکام، اس کی عرب شناخت، خودمختاری اور علاقائی سالمیت پر زور دیا گیا ہے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ سیاسی حل ہی بحران کے حل کا واحد راستہ ہے۔

ذرائع نے المجلہ میگزین کو بتایا کہ عرب وزرائے خارجہ نے جدہ اور عمان ملاقاتوں کے مطابق اپنے وعدوں پر عمل درآمد کے لیے دمشق کی تیاری کا خیرمقدم کیا۔

ایک سفارتی ذریعے نے اس سے قبل بتایا تھا کہ ہفتے کے روز مستقل مندوبین کی سطح پر عرب لیگ لیگ کے ہنگامی اجلاس میں شام کی رکنیت معطل کیے جانے کے 11 سال سے زائد عرصے بعد لیگ میں واپسی کے لیے بڑے پیمانے پر حمایت دیکھنے میں آئی۔

ذرائع نے عرب اور عالمی خبر رساں ایجنسیوں کو دیے گئے بیانات میں کہا کہ عرب لیگ میں اپنی خالی نشست پُر کرنے کے لیے شام کی واپسی کا فیصلہ عرب وزرائے خارجہ کو سونپا گیا ہے۔ یہ اجلاس آج اتوار کو ہوگا جس میں شام کی عرب لیگ میں واپسی اور سوڈان میں جاری خانہ جنگی پر غور کیا جائے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں