اسلامی جہاد غزہ

اسرائیل کے میزائل حملہ میں ’’ اسلامی جہاد‘‘ کے میزائل یونٹ کے سربراہ علی غالی جاں بحق

خان یونس میں رہائشی یونٹ کو نشانہ بنایا گیا، غزہ کی پٹی سے داغے گئے 469 راکٹوں میں سے 153 کو روک لیا: اسرائیلی فوج

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیل نے جمعرات کو بھی غزہ کی پٹی پر جارحیت جاری رکھی۔ غزہ کی پٹی سے اسرائیلی علاقوں پر راکٹ فائر کیے گئے۔ اسرائیل نے غزہ کی پٹی کے علاقے خان یونس میں تحریک اسلامی جہاد کے مسلح ونگ ’’ القدس بریگیڈ‘‘ یں میزائل یونٹ کے سربراہ علی غالی کے رہائشی یونٹ پر میزائل حملہ کیا۔ اس حملے میں علی غالی سمیت 3 فلسطینی جاں بحق ہوگئے۔

القدس بریگیڈز نے ایک بیان میں ملٹری کونسل کے رکن اور بریگیڈز میں میزائل یونٹ کے انچارج علی غالی کے جاں بحق ہونے پر اظہار افسوس کیا ہے۔ اسرائیلی فوج نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ کی آئی ڈی ایف اور شاباک نے مشترکہ کارروائی میں علی غالی کو نشانہ بنایا ہے۔

اسرائیلی فوج نے کہا ہے کہ غزہ کی پٹی سے داغے گئے 469 راکٹوں میں سے 153 کو ناکارہ بنا دیا گیا ہے۔ ’’العربیہ‘‘ کے نمائندے نے بتایا کہ فلسطینی دھڑوں نے تل ابیب کی طرف راکٹ فائر کیے اور راکٹوں نے بئر شیبہ کو نشانہ بنایا۔ اسرائیلی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ وہ جنگ جاری رکھنے اور ریزرو فورسز کو متحرک کرنے کے لیے تیار ہیں۔

اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو نے کہا ہے کہ جنگ ابھی ختم نہیں ہوئی۔ سیکیورٹی کی نئی مساوات فلسطینی دھڑوں کے رہنماؤں کو نشانہ بنانے کے لیے مناسب وقت کا تعین کر رہی ہے۔ آنے والے گھنٹوں کے دوران غزہ میں جنگ بندی تک پہنچنے کی کوششیں جاری ہیں۔ وائٹ ہاؤس نے بدھ کے روز کہا تھا کہ قومی سلامتی کے مشیر جیک سلیوان نے اسرائیل کی قومی سلامتی کونسل کے سربراہ زاچی ہنیگبی کے ساتھ فون کال کے دوران کشیدگی کو کم کرنے کی ضرورت پر زور دیا ہے۔

نجی ذرائع کے مطابق قاہرہ نے فلسطینی دھڑوں کے ساتھ رابطے کی ایک لائن کھول دی ہے اور وہ اس وقت تک اپنی شرائط پر قائم ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں