اقوام متحدہ کا اسرائیل اور فلسطینیوں سے کشیدگی فوری ختم کرنے کا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اقوام متحدہ کے نائب ترجمان فرحان حق نے بدھ کو کہا کہ سیکرٹری جنرل گوٹیریس نے غزہ میں شہریوں کی ہلاکتوں کو "ناقابل قبول" قرار دیا اور اس کی مذمت کی ہے۔ سیکرٹری جنرل یو این نے مطالبہ کیا ہے کہ کشیدگی فوری طور پر ختم کی جائے۔ انہوں نے تمام فریقوں سے زیادہ سے زیادہ تحمل کا مظاہرہ کرنے کا بھی مطالبہ کیا۔

واضح رہے اقوام متحدہ کے مطالبے کے باوجود بدھ کے روز اور آج جمعرات کو بھی اسرائیلی فوج نے غزہ کی پٹی پر بمباری کی اور غزہ کی جانب سے اسرائیلی علاقوں میں راکٹ فائر کیے جاتے رہے ہیں۔ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کا بدھ کو بند دروازوں کے پیچھے اجلاس ہوا جس میں تشدد میں اضافے پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

فلسطینی ذرائع کے مطابق منگل سے شروع اسرائیلی حملوں میں اب تک بچوں اور خواتین سمیت 25 فلسطینی جاں بحق ہو چکے ہیں۔ منگل کو حملے میں اسلامی جہاد کے تین کمانڈرز جاں بحق ہوگئے تھے۔ جمعرات کی علی الصبح کے اسرائیلی حملے میں اسلامی جہاد کی القدس بریگیڈ کے میزائل یونٹ کے سربراہ علی غالی جاں بحق ہوگئے۔

اپنے بیان فرحان حق نے کہا کہ اسرائیل کو بین الاقوامی انسانی قانون کے تحت اپنی ذمہ داریوں کو پورا کرنا چاہیے۔ ان ذمہ داریوں میں طاقت کا متناسب استعمال بھی شامل ہے۔ فوجی کارروائیوں کے دوران عام شہریوں اور شہری اہداف کو نشانہ بنانے سے بچنے کے لیے تمام ممکنہ احتیاطی تدابیر اختیار کرنا چاہیے۔

انہوں نے مزید کہا گوٹریس نے غزہ سے اسرائیل پر اندھا دھند راکٹ داغنے کی بھی مذمت کی اور کہا ہے کہ یہ بین الاقوامی انسانی قانون کی خلاف ورزی ہے۔ اس سے فلسطینی اور اسرائیلی شہریوں کی جانوں کو خطرے میں ڈالا جارہا ہے۔ تمام فریق زیادہ سے زیادہ تحمل کا مظاہرہ کریں اور دشمنی کے فوری خاتمے کے لیے کام کریں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں