تاریخی منظر، دو سعودی خلاباز عالمی خلائی سٹیشن میں داخل ہوگئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ڈریگن خلائی جہاز کامیابی کے ساتھ بین الاقوامی خلائی سٹیشن کے ساتھ مل گیا تو دو سعودی خلاباز ریانہ برناوی اور علی القرنی ایک تاریخی منظر میں اس عالمی خلائی سٹیشن میں داخل ہوگئے۔

ریانہ برناوی اور علی القرنی اپنے ساتھیوں، ناسا کے سابق خلاباز پیگی وٹسن اور امریکی کاروباری جان شوفنر کے ساتھ، اتوار کی شام خلائی سفر پر روانہ ہوئے تھے۔ اب یہ خلائی سٹیشن پہنچ گئے اور وہاں دس روز گزاریں گے۔ لاکھوں سعودیوں نے اپنے ملک کے خلا بازوں کے ساتھ اظہار یک جہتی کیا اور ان کے اس خلائی مشن کے ساتھ جڑے ہوئے دکھائی دئیے۔

یہ خلائی سفر سعودی عرب کے اس پروگرام کے ضمن میں آتا ہے جس کا مقصد تجربہ کار سعودی کیڈرز کو خلائی پروازوں میں جانے کے لیے اہل بنانا اور خلائی شعبے سے متعلق سائنسی تجربات اور بین الاقوامی تحقیق میں حصہ لینے کے قابل بنانا ہے۔

سعودی عرب نے 2018 میں سعودی سپیس اتھارٹی قائم کی تھی اور گزشتہ برس خلابازوں کو خلا میں بھیجنے کا پروگرام شروع کردیا تھا۔ سعودی عرب نے کئی سال پہلے اپنے ایک شہری کو خلا میں بھیجا تھا۔ سعودی شاہ سلمان کے بیٹے شہزادہ سلطان بن سلمان نے 1985 میں ایک امریکی مشن میں شرکت کی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں