عرب ورلڈ ریڈر ایوارڈ عراق کے زین العابدین المرشدی نے جیت لیا

عوامی ووٹ نے سعودی عرب کی بلقیس السولان کو سال کی بہترین ریڈر کے اعزاز سے نوازا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سعودی عرب میں کنگ عبدالعزیز سنٹر فار ورلڈ کلچر (اثراء) کے تحت منعقد ریڈنگ اینرچمنٹ پروگرام (اقرا) اختتام پذیر ہوگیا۔ اختتامی تقریب میں سعودی وزیر تعلیم یوسف البنیان اور سعودی آرامکو کے صدر انجینئر امین الناصر سمیت بہت سے معززین، دانشوروں اور مفکرین نے شرکت کی۔

اختتامی تقریب اثراء نے ایوارڈز کا اعلان کیا۔ ثالثی کمیٹی کے انتخابات کے تحت اس سال کے ’’جنرل ریڈر‘‘ کا ایوارڈ عراق کے زین العابدین المرشدی نے جیت لیا۔ مراکش سے تعلق رکھنے والے سفیان البراق کو ’’ریڈر آف دا ایئر‘‘ کا اعزاز دیا گیا۔

سعودی عرب سے تعلق رکھنے والے عبد الرحمن عوفی نے ’’ریڈنگ ایمبیسیڈرز ‘‘ کا ایوارڈ حاصل کیا۔ ’’بہترین ریڈنگ سکول‘‘ کا ٹائٹیل زہران نیشنل سکولز نے جیت لیا۔ اس کے بعد عوامی ووٹ کے تحت ’’ جنرل ریڈر‘‘ کا ایوارڈ سعودی عرب سے تعلق رکھنے والی بلقیس السولان نے جیت لیا۔

اختتامی تقریب کے آغاز میں عرب شاعر اور مفکر ایڈونیس نے اس بات پر زور دیا کہ "پڑھنا" انسان اور زندگی کے قرآنی ویژن کی کلید ہے کیونکہ اس کے تخلیقی اثرات ہیں۔ علم طاقت ہے اور پڑھنے کی توثیق کے لیے لکنا لازمی شرط ہے۔ انہوں نے عربوں کے لیے مادری زبان میں مہارت حاصل کرنے کی اہمیت پر بھی زور دیا۔

125 ہزار درخواست دہندگان

اثراء کے ڈائریکٹرعبداللہ خالد الراشد نے مقابلے کے نتائج پر اپنے فخر کا اظہار کیا اور کہا اس مقابلے کا دائرہ عرب بھر میں پھیلا ہوا ہے۔ انہوں نے کہا ’’ اقرا‘‘ مقابلہ نہ صرف پڑھنے کا ایک مسابقتی مقابلہ ہے بلکہ اثراء اسے عرب فکر میں ایک سنگ میل بنانے کی کوشش کر رہا ہے تاکہ اس کے ذریعہ سے تنقیدی سوچ کی فیکلٹی تیار کی جا سکی اور پڑھنے کو ایک معاشرتی ترجیح کے طور پر منایا جاسکے اور اس کی طرح نوجوان رجوع کریں۔ تعمیری اور نتیجہ خیز سوچ کے ساتھ تمام عرب ملکوں کے لیے مقابلہ میں شرکت کا دروازہ بھی اسی مقصد کے لیے کھولا گیا ہے۔

تقریب سے ایک تصویر

انہوں نے وضاحت کی کہ دسواں سال میں اس پروگرام کے لیے ایک کوانٹم لیپ لے کر آیا ہے اور اس سال اس مقابلے میں 125 ہزار افراد نے حصہ لینے کی درخواستیں دیں۔

ڈیجیٹل توازن پر پہلی عربی تحقیق

الراشد نے اثرا مرکز کی جانب سے آرامکو کے صدر کی رہنمائی میں ایک ایسی تحقیق پر کام کرنے کا انکشاف کیا جو عرب دنیا میں اپنی نوعیت کی پہلی اور ڈیجیٹل توازن کے شعبے میں دنیا کی سب سے بڑی تحقیق ہے

یہ تحقیق انسانی ذہن اور سماجی زندگی پر ٹیکنالوجی جیسے سوشل میڈیا، مصنوعی ذہانت اور دیگر کے اثرات کا جائزہ لیتی ہے اور بتاتی ہے کہ ٹیکنالوجی کیسے علم اور فکر کے ذرائع سے تعلق کو غیر مستحکم کر رہی ہے۔

وزارت تعلیم کے ساتھ مفاہمت کی یادداشت

اثراء نے پروگرام کی اختتامی تقریب کے موقع پر وزارت تعلیم کے ساتھ مفاہمت کی ایک یادداشت پر دستخط کیے۔ جس میں وہ پروگرام شامل ہیں جو مرکز سالانہ منعقد کرتا ہے۔ مفاہمت کی یادداشت میں سائنس، ٹیکنالوجی اور انجینئرنگ کی بنیادی باتوں کے بارے میں مسابقت اور پڑھنے کے جذبے کو فروغ دینے اور پھیلانے میں دونوں فریقوں کے تعاون کو یقینی بنایا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں