سعودی خلائی سائنسدانوں کا 10 روزہ خلائی مشن مکمل، واپسی کا سفر شروع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

دس دن کی خلائی تحقیق اور سائنسی تجربات کے بعد سعودی خلاباز ریانہ برناوی اور علی القرنی نے کل منگل کو بین الاقوامی خلائی اسٹیشن پر اپنا مشن مکمل کیا اور زمین کی طرف واپسی کا سفر شروع کیا ہے۔

سعودی اسپیس اتھارٹی نے ’ٹویٹر‘ پر ایک ویڈیو کلپ نشر کیا جس میں سعودی خلابازوں کے سائنسی مشن کے اختتام کے بعد بین الاقوامی خلائی اسٹیشن پر آخری لمحات کو دکھایا گیا ہے۔

دو سعودی خلابازوں اور ان کے ساتھی امریکیوں پیگی وائٹسن اور جان شوفنر کو لے کر "ڈریگن" نے واپسی کا سفر شروع کیا ہے جس میں پانی تک پہنچنے میں تقریباً 12 گھنٹے لگیں گے۔ سعودی عرب کی اسپیس اتھارٹی نے کہا کہ "Ax-2" خلائی مشن جسے 22 مئی کو پہلے سعودی سائنسی مشن کے طور پرشروع کیا گیا تھا وہ اختتام پذیر ہوگیا ہے۔

"ڈریگن" خلائی جہاز جو کہ انسانوں کو خود بخود زمین سے باہر لے جانے والا پہلا خلائی جہاز ہے نے منگل کو بین الاقوامی خلائی اسٹیشن سے اپنا علیحدگی کا سفر شروع کیا۔ اس نے فضا میں داخل ہونے تک کئی تجربات کیے اور یوں ساحل سے دور بدھ کی صبح فلوریڈا میں اتر گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں