جنگ زدہ سوڈان کی خاتون وکیل کو انسانی ہمدردی نے سوشل میڈیا پر ہیروئن بنا دیا

خاتون وکیل ایڈووکیٹ شیماء سراج نے اپنے مؤکلوں کی فیس معاف کرنے کے ساتھ ان کے لیے نیک تمناؤں کا اظہار کیا جس پر سوشل میڈیا پر ان کے اقدام کو سراہا جا رہا ہے۔

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سوڈان ان دونوں دو متحارب فوجی قوتوں کے درمیان جاری لڑائی کی وجہ سے عالمی توجہ کا مرکز ہے۔ لڑائی کے جھنم زار میں جہاں ہر طرف نفسا نفسی کا عالم ہے وہاں خال خال لوگ ایسے بھی ہیں جن میں انسانی ہمدردی کا جذبہ موجود ہے۔

ایسے انسان دوست لوگوں میں ایک خاتون وکیل شیما بھی شامل ہیں جن کی اپنے مؤکلوں کے ساتھ دوستی اور ان کے کیسز کی فیسیں نہ لینے کے اعلان نے انہیں سوشل میڈیا کی ہیروئن بنا دیا ہے۔

ایڈوکیٹ شیماء کی جانب سے سوڈان میں جنگ کی وجہ سے اپنے مؤکلوں کے تمام مالی واجبات معاف کرنے کے اعلان کے ساتھ ساتھ ان کی اچھی صحت اور وقار کے لیے نیک خواہشات کو سوشل میڈیا پر سراہا جا رہا ہے۔

وکیل شیماء نے کل پیر کو اپنے ذاتی فیس بک اکاؤنٹ پرایک پوسٹ میں لکھا کہ "میں شیماء تاج السر یہ اعلان کرتی ہوں کہ میری طرف سے میرے تمام مؤکل اپنے کیسز کی فیسوں کے حوالے سے مطمئن رہیں۔ میں ان کی فیس معاف کرتی ہوں اور میں ان کی صحت اور سلامتی کی دعا گو ہوں۔ جنگ کی وجہ سے میرے تمام کلائنٹس خاص طور پر وہ لوگ جو جنگ کی وجہ سے مجھ سے رابطہ نہیں کر پا رہے ہیں میں ان کے لیے بھی دعا گو ہوں۔ میں نہیں چاہتی کہ آپ میں سے کوئی بھی قرض کا بوجھ اٹھائیں"۔

شیما نے دل کو چھونے والے الفاظ میں مزید کہا کہ "میں سچ کہتی ہوں۔ یہ مجھے آپ کو یقین دلانے کے لیے کافی ہے کہ آپ ٹھیک ہیں، خطرے کی جگہوں سے دور ہیں۔ یہ میرے لیے کافی ہے کہ آپ نے اپنے کیسزکی پیروی کے لیے میرا انتخاب کیا۔ آپ نے مجھ پر بھروسہ کیا۔ مجھے امید ہے کہ ہم جلد ملیں گے‘‘۔

ایڈووکیٹ شیماء نے ’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ کو بتایا کہ سوشل میڈٰیا پر اس اعلان نے غیرمعمولی توجہ حاصل کی اور سوشل میڈیا پر میرے اقدام کو سراہا گیا ہے۔

شیماء نے امید ظاہر کی کہ ان کا یہ قدم دوسرے وکلاء کے لیے ایک پیغام اور ترغیب بنے گا اور اسے لوگوں کے مسائل کے حل میں مدد ملے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں