فلسطین پر اسرائیلی حملوں کی شدید مذمت کرتے ہیں: اماراتی وزارت خارجہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

متحدہ عرب امارات نے جنین اور اس کے مہاجر کیمپوں پر اسرائیلی فورسز کی بمباری اور حملوں میں فلسطینی جانوں کے ضیاع کی مذمت کی ہے۔

خبر رساں ایجنسی ’’وام‘‘ کے مطابق اماراتی وزارت خارجہ نے اسرائیلی حکام سے جارحیت ختم کرنے اور فلسطینی علاقوں میں کشیدگی سے احتراز کے لئے اقدامات اٹھانے کا مطالبہ کیا ہے۔

وزارت خارجہ نے کشیدگی کے خاتمے کے لئے تمام علاقائی اور بین الاقوامی کوششوں کی حمایت کرتے ہوئے مشرق وسطیٰ میں امن عمل کی بحالی کا مطالبہ کیا ہے۔

اماراتی حکام نے اپنے بیان میں دو ریاستی حل کی راہ میں حائل تمام سرگرمیوں کو روکنے اور 1967 کی سرحدوں میں آزاد فلسطینی ریاست کے قیام کی ضرورت پر زور دیا۔

پیر کے روز مغربی کنارے کے شمالی شہر جنین کے قریب اسرائیلی فوج اور فلسطینی مزاحمت کاروں کے درمیان شدید ترین لڑائی دیکھنے میں آئی۔ جس میں ایک 15 سالہ نوجوان سمیت پانچ فلسطینی شہید ہوئے اور 90 سے زیادہ زخمی ہوئے۔ اسرائیل کے مطابق آٹھ اسرائیلی فوجی بھی زخمی ہوئے۔

اسرائیل کا کہنا ہے کہ ہلاک ہونے والے زیادہ تر فلسطینی عسکریت پسند تھے، لیکن پتھراؤ کرنے والے نوجوان جو حملے کے خلاف احتجاج کر رہے تھے اور دیگر جو تصادم میں شامل نہیں تھے، بھی مارے گئے ہیں۔ اس جھڑپ کے دوران اسرائیل نے کئی سالوں میں پہلی بار مغربی کنارے میں ہیلی کاپٹر گن شپ کا استعمال کیا، اور فلسطینی عسکریت پسندوں نے ایک اسرائیلی بکتر بند گاڑی کے نیچے سڑک کے کنارے ایک بڑا بم دھماکہ کیا۔

اسرائیل اور فلسطینی کئی مہینوں کے تشدد کی لپیٹ میں ہیں، جن کا مرکز مغربی کنارا ہے، جہاں اس سال تقریباً 120 فلسطینی شہید اور 20 اسرائیلی اور متعدد غیر ملکی شہری ہلاک ہو چکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں