حج 1444

عازمین حج کی سہولت کے لیے پہلی بار سیلف ڈرائیونگ بس سروس کا آغاز

مصنوعی ذہانت سےچلنے والی سیلف ڈرائیونگ بس میں 11 سیٹیں نصب ہیں اور یہ ایک بار چارج کرنے کے بعد چھ گھنٹے سفر کرسکتی ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کی حکومت نے سال 1444ھ کے حج سیزن کے موقعے پر عازمین کی سہولت کے لیے غیرمعمولی اقدامات کیے ہیں۔ عازمین کی آمد ورفت کے لیے روایتی ٹرانسپورٹ سروس کے علاوہ رواں سال حج کے موقعے پر خود کار ڈرائیونگ بس سروس متعارف کرائی گئی ہے۔ سعودی عرب کی حکومت کی جانب سے حج سیزن کے موقعے پر عازمین کی آمد ورفت کے لیے یہ جدید ترین منصوبہ ہے جسے عازمین کے لیے انقلابی قدم قرار دیا جا رہا ہے۔

جدید ٹیکنالوجی کی مدد سے چلنے والی یہ گاڑیاں خود کار طریقے سے چلنےوالی شٹل بس سروس کے تجربے کا حصہ ہیں جو پہلی بار ضیوف الرحمان کی سہولت کے لیے شروع کی گئی ہے۔ سعودی ٹرانسپورٹ اتھارٹی کا یہ فقید المثال منصوبہ انسان اور ماحول دوست ہونے کے ساتھ کم خرچ بالا نشین خصوصیات کا حامل ہے۔

سیلف ڈرائیونگ ٹیکسی سروس مصنوعی ذہانت کی ٹیکنالوجیز اور اپنے اردگرد گرد لگے کیمروں اور سینسر استعمال کرتی ہوئے سڑک پر چلتی ہیں۔ یہ گاڑیاں انسانی مداخلت کے بغیر ایک مخصوص ٹریکس پر چلائی جا سکتی ہیں۔ یہ چلتے ہوئے معلومات اکٹھی کرتی ہیں اور ضروری فیصلے کرنے کے لیے اس کا تجزیہ کرتی ہیں۔ ایک بس میں 11 سیٹیں رکھی گئی ہیں۔ ایک بار ان کی بیٹری چارج کرکے انہیں چھ گھنٹے تک چلایا جا سکتا ہے۔ یہ بسیں 30 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتارسے سفر کرسکتی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں