شامی صدر بشار الاسد کے آبائی شہرمیں ڈرون حملہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

شامی حکومت نے اعلان کیا ہے کہ شام کے صدر بشار الاسد کے آبائی شہر’القرادحہ‘ نامعلوم مسلح گروپ کی طرف سے کیے گئے ڈرون حملے میں ایک شخص ہلاک اور ایک معمولی زخمی ہوا ہے۔

شام کی سرکاری نیوز ایجنسی ’سانا‘ نے حکام کے حوالے سے بتایا ہے کہ اس حملے کے پیچھے’لاذقیہُ کے اطراف میں سرگرم عسکریت پسند گروپ کا ہاتھ ہو سکتا ہے۔

’سانا‘ نے سکیورٹی ذرائع کے حوالے سے بتایا کہ ڈرون نے دو بم گرائے، جن میں سے ایک قرادحہ کے قریب زرعی اراضی پر گرا، جس سے انجینیر محمد ہانی سلطانہ (25 سال) ہلاک اور ایک شہری معمولی زخمی ہوا۔ اس حملے میں ایک عمارت کو نقصان پہنچا۔

دوسری طرف "سیرین آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس" نے بتایا ہے کہ اللاذقیہ کے دیہی علاقوں میں یکے بعد دیگرے دھماکوں کی آوازیں سنی گئیں۔ یہ آوازیں نامعلوم گروپ کی طرف سے داغے گئے راکٹوں کی تھیں۔

آبزرویٹری کا کہنا تھا کہ حملے میں ایک شخص ہلاک اور متعدد زخمی ہوئے۔ شام میں انسانی حقوق کی صورت حال پر نظر رکھنے والے ادارے کا کہنا ہے کہ یہ اپنی نوعیت کا پہلا حملہ ہے جس میں شامی صدر کے آبائی شہر کو نشانہ بنایا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں