سعودی محکمہ صحت کی حجاج کرام کو سن اسٹروک سے متعلق محتاط رہنے کی ہدایت

ہیٹ اسٹروک کے کیسز وصول کرنے کے لیے 217 بستر مختص، ہسپتالوں میں خصوصی انتظامات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کی وزارت صحت نے حجاج کرام کو گرمی کی شدت کے خلاف الرٹ جاری کرتے ہوئے انہیں محتاط رہنے اور خود کو سورج کی شعاعوں سے بچانے پر زور دیا ہے۔ وزارت صحت کا کہنا ہے کہ رواں موسم حج شدید گرمی اور بلند درجہ حرارت میں آرہا ہے جس سے حجاج کرام کی صحت کو خطرہ لاحق ہے۔

وزارت صحت نے سن اسٹروک کے کیسز وصول کرنے کے لیے 217 بستر مختص کیے ہیں، جن میں مقدس مقامات کے ہسپتالوں میں 166 بستر اور مکہ مکرمہ میں 51 بستر شامل ہیں۔

وزارت صحت نے واٹر مسٹ پنکھے بھی بڑی تعداد میں فراہم کیے ہیں، جو گرمی کے دباؤ اور سن اسٹروک کے کیسز سے نمٹنے میں کارگر ثابت ہوئے ہیں۔

وزارت صحت نے عازمین کی صحت کی سہولیات سے نمٹنے کے لیے متعدد کورسز اور فیلڈ ٹریننگ پروگرام بھی شروع کیے ہیں۔ ان پروگرامات میں عازمین کو ہیٹ اسٹروک سے بچنے کے مختلف طریقوں سے متعلق آگاہی مہیا کی گئی ہے۔

منیٰ کےمقام پر واٹر سپرے پوائنٹس تیارکیے گیے ہیں جہاں سے پانی بخارات بنا کر فضا میں گرمی کم کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔ اس سروس سے درجہ حرارت کو 5 سے 7 ڈگری سینٹی گریڈ تک کم کرنے میں مدد ملتی ہے۔ خیال رہے کہ سعودی عرب کے محکمہ موسمیات کے مطابق اس سال حج کے موسم میں درجہ حرارت 42 سے 45 ڈگری سینٹی گریڈ کے درمیان ہوگا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں