سعودی عرب میں حد حرابہ میں ایک، اور تعزیرا 4 افراد کو موت دیدی گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب میں ایک مجرم کو حد حرابہ میں اور چار افراد کو تعزیری طور پر موت کی سزا دے دی گئی۔

سعودی وزارت داخلہ نے پیر کے روز جاری بیان میں کہا کہ ایک مصری شہری طلحہ ہشام محمد عبدہ اور چار سعودی شہریوں کو احمد بن محمد بن احمد عسیری، نصار بن عبداللہ بن محمد الموسیٰ، حمد بن عبداللہ بن محمد الموسیٰ اور عبداللہ بن عبدالرحمٰن بن عبدالعزیز التویجری کو سزائے موت دی گئی ہے۔ انہوں نے حرابہ سمجھے جانے والی جرائم پر مبنی اقدامات کیے تھے۔ طلحہ کے ذریعہ الاحساء گورنری میں ایک عبادت گاہ کو نشانہ بنایا گیا تھا۔ عبادت گاہ کو تباہ کرنے کی کارروائی میں باقی ملزموں نے بھی حصہ لیا تھا۔ اس کارروائی میں 5 افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے تھے۔ مجرموں نے سکیورٹی اہلکاوں اور عبادت گاہ پر اس کی براہ راست فائرنگ کی تھی۔ ایک حملہ آور نے خود کو دھماکے سے اڑانے کی کوشش کی تھی۔ اس کا دہشت گرد تنظیموں میں سے ایک کے ساتھ تعلق بھی تھا۔ اس نے "احمد"، "نصار" اور ’’حمد‘‘ کو اس تنظیم میں شامل کرنے کی منصوبہ بندی کی تھی۔ ان سب نے طلحہ کے ساتھ مل کر حملے کی منصوبہ بندی کی اور اس پر عمل کیا تھا۔ ’’عبد اللہ‘‘ کو بھی دہشتگرد تنظیم میں شامل کیا گیا تھا تاکہ دہشتگردانہ کارروائی کو چھپایا جا سکے۔

پانچوں مجرموں کو خصوصی عدالت میں پیش کیا گیا تھا۔ عدالت میں جرم ثابت ہونے پر سزا سنائی گئی تھی۔ پیر 3 جولائی کو ان افراد کی سزائے موت پر عمل کردیا گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں