سعودی عرب: منی لانڈرنگ کیس میں مقامی شہری سمیت 2 افراد کو سزا سنا دی گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب میں منی لانڈرنگ سے متعلق کیس میں مقامی شہری سمیت 2 افراد پر فرد جرم عائد کردی گئی ۔ پبلک پراسیکیوشن کے ایک ذریعے نے بتایا کہ اقتصادی جرائم پراسیکیوشن کی تحقیقات کے نتیجے میں منی لانڈرنگ اور رقم چھپانے کا جرم ثابت ہونے پر سزا سنادی گئی ۔

دوران تفتیش یہ بات سامنے آئی کہ ایک سعودی شہری نے ایک تارک وطن کو تجارتی سرگرمیوں میں مشغول ہونے کے لیے ماہانہ اجرت کے بدلے میں اپنا بینک اکاؤنٹ استعمال کرنے کے قابل بنایا تھا۔ اس اکاؤنٹ میں طبی سامان اور ادویات کی خرید و فروخت کی سرگرمیوں کے دوران استعمال کیا جاتا۔ اکاؤنٹ کی بنا پر تارک وطن کو سرکاری اداروں کے ساتھ معاہدہ کرنے اور مذاکرات کرنے کی صلاحیت حاصل ہو گئی تھی۔

تفتیشی طریقہ کار سے یہ بھی معلوم ہوا کہ تارکی وطن نے 7 ملین ریال سے زائد رقم جمع کر کے مملکت سے باہر منتقل کی۔ تجارتی اداروں کا معائنہ کرنے سے 6 ملین ریال مالیت کی منی لانڈرنگ کی رقم برآمد ہوئی۔ 5 اے ٹی ایم کارڈز، تجارتی ادارے کی 5 مہریں، چیک بک اور دستخط شدہ خالی چیک بھی پکڑے گئے۔

پبلک پراسیکیوشن نے دونوں مدعا علیہان کو مجاز عدالت میں پیش کردیا۔ عدالت سے ان دونوں میں سے ہر ایک کو چار، چار سال قید کی سزا سنائی گئی ہے۔ دونوں کو 6 ملین ریال جرمانہ بھی عائد کیا گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں