’’ اللہ کی تقدیر پر راضی ہیں‘‘ ڈوب جانے والے 2 بچوں کے سعودی والد کا بیان

برکہ سلامہ نے ’’ العربیہ ڈاٹ نیٹ‘‘ کو قریات گورنری میں ہانی اور وسیم کے گہرے گڑھے میں ڈوبنے پر گفتگو کی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب میں شمالی گورنری قریات میں خاندان کے ساتھ تفریحی دورے پر نکلنے کے بعد ریل کی پٹری کے ساتھ گہرے گڑھے میں گر کر دو کمسن بھائیوں ہانی اور وسیم کی موت نے لوگوں کو غمزدہ کردیا ہے۔ ہانی اور وسیم کے والد بركہ سلامہ هملان شراری نے اس المناک واقعہ پر ’’ العربیہ ڈاٹ نیٹ‘‘ سے گفتگو کی۔

برکہ سلامہ نے کہا ’’حالات اور تقدیر نے مجھے عصر کی نماز مکمل کرنے کی اجازت نہ دی۔ میں نے نماز شروع ہی کی تھی کہ تکلیف دہ آواز سنی اور اپنے بچوں کو ڈوبنے سے بچانے کے لیے میں آواز کی طرف بھاگا۔ انہوں نے بتایا میں ہم خاندان کے افراد کے ساتھ پکنک پر تھے، ۔ میں اپنے بچوں کو دیکھ رہا تھا۔ وہ ایک چھوٹے سے پانی کے سوراخ میں کھیل رہے تھے۔ میں عصر کی نماز پڑھنے گیا۔ کچھ ہی لمحے گزرے کے 15 سالہ ہانی اور 11 سالہ وسیم کا پاؤں پھسلا اور وہ قریب موجود بڑے گڑھے میں گر گئے۔ بہت کم وقت میں ہی دونوں ڈوب کر جاں بحق ہوگئے۔

برکہ سلامہ نے بتایا کہ جس گڑھے میں بچے کھیل رہے تھے وہ گہرا نہیں تھا۔ میں انہیں اس گڑھے میں کھیلتا ہوا دیکھ رہا تھا۔ جیسے ہی میں نے نماز پڑھنا شروع کی ایک آفت آگئی جس نے مجھے نماز مکمل کرنے سے روک دیا۔ میں نے اپنے بچوں کی طرف بڑھنے کی کوشش کی اور تقریباً وہی انجام مجھے بھگتنا پڑا۔ ان مشکل لمحات میں بچوں کو بچانے کے لیے بہت سے جوان آگئے۔ آدھے گھنٹے کے بعد ان میں سے ایک کو باہر نکالا گیا اور پھر اللہ کا شکر ہے پھر دوسرا بھی بازیاب ہوگیا۔

غم اور اداسی میں ڈوبے والد برکہ سلامہ نے کہا ہم اللہ کے فیصلے اور تقدیر سے مطمئن ہیں۔ ہم اللہ سے دعا گو ہیں کہ وہ ہمارے دلوں کو باندھ دے اور ہمیں عزم اور صبر عطا کرے۔ میں لوگوں سے بھی کہتا ہوں ہمارے لیے دعا کریں کہ اللہ ہمیں صبر اور سکون عطا فرمائیں۔ یہ اللہ کا حکم ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں