اسرائیل میں عدلیہ اصلاحات منصوبے کے خلاف مظاہرین نے شاہراہیں بلاک کردیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اسرائیل میں نیتن یاھو کی حکومت کی جانب سے عدالتی اصلاحات منصوبے کے تحت نئے مسودہ قانون کی پہلی خواندگی مکمل کرلی گئی۔ عدالتی اصلاحات کے خلاف حزب اختلاف آج کے دن کو متحرک کرنے کے دن کے طور پر منا رہی ہے۔ اپوزیشن کی کال پر بڑی تعداد میں مظاہرین نے مرکزی شاہراہوں کو بلاک کرکے رکھ دیا ہے۔ واضح رہے حکومت کی جانب سے اس ترمیمی ایکٹ کے ذریعہ سپریم کورٹ کے کچھ اختیارات سلب کیے جا رہے ہیں۔

اپوزیشن کے بڑے احتجاج کے حوالے سے سامنے آنے والے ویڈیو کلپس میں دکھایا گیا ہے کہ جھنڈا لہراتے اسرائیلیوں کا جم غفیر بڑے چوراہوں اور وسطی اسرائیل میں کاروباری مرکز تل ابیب اور القدس کے داخلی راستے کے قریب شاہراہوں کو بلاک کرکے کھڑا ہے۔ کچھ مظاہرین سڑکوں پر لیٹے ہوئے ہیں اور کچھ آگ بھی لگا رہے ہیں۔

پولیس کے مطابق 24 افراد کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔ کچھ مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے پانی کی توپ کا استعمال بھی کیا گیا۔ دوسروں کو طاقت کے ذریعے گھسیٹ لیا گیا۔ منگل کے روز ملک بھر میں مزید مظاہروں کی منصوبہ بندی کی گئی تھی۔ مرکزی بین الاقوامی بین گوریون ہوائی اڈے پر بھی بڑی تعداد میں مظاہرہ کیا گیا۔

نیتن یاہو کے قوم پرست مذہبی اتحادی حکومت نے نظام انصاف میں ترمیم لانے کی مہم دوبارہ شروع کردی ہے جس پر ایک مرتبہ پھر اسرائیل میں بڑے مظاہرے شروع ہوگئے ہیں۔ اسرائیلی حکومت کے عدلیہ اصلاحات کے نام پر شروع کیے گئے منصوبے پر مغربی اتحادیوں نے بھی بھی تشویش کا اظہار کیا ہے اور اسے اسرائیل کی جمہوری صحت اور معیشت کے لیے نقصان دہ قرار دیا ہے۔

پیر کی شام عدالتی ایکٹ کے نئے ترمیمی بل کی تین میں سے پہلی خواندگی کی منظوری حاصل کرلی گئی۔ 56 کے مقابلے میں 64 ووٹوں سے پہلی خواندگی کی منظوری دی گئی۔ اگر یہ بل تمام مراحل سے گزر کر ایکٹ بن گیا تو اس سے سپریم کورٹ کے حکومت، وزراء اور منتخب عہدیداروں کے فیصلوں کو غیر معقول قرار دے کر کالعدم کرنے کے اختیار کو ختم کردیا جائے گا۔

اس بل کے ناقدین کا کہنا ہے کہ اس عدالتی نگرانی سے بدعنوانی اور اختیارات کے ناجائز استعمال کو روکنے میں مدد ملتی ہے۔ بل کے حامیوں کا کہنا ہے کہ یہ تبدیلی عدالتی مداخلت کو روکنے کے ذریعے موثر حکمرانی میں سہولت فراہم کرے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں