مائع گیس سے چلنے والا پہلا بحری جہاز سعودی عرب کے مشرقی ساحل پر پہنچ گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ماحول دوست مائع قدرتی گیس (ایل این جی) سے مکمل طور پر چلنے والا پہلا کنٹینر جہاز سعودی عرب کے ساحلی شہر دمام میں کنگ عبدالعزیز پورٹ میں پہنچ گیا ہے۔ یہ جہاز 366 میٹر لمبا، 51 میٹر چوڑا اور 16 میٹر گہرا ہے۔

اس جہاز کا نام CMA CGM SYMI ہے اور یہ اپنی نوعیت کا پہلا بحر جہاز ہے جو سعودی عرب کے مشرقی علاقے کی بندرگاہوں پر پہنچا ہے، جس کی گنجائش 15,000 TEUs سے زیادہ ہے۔

"غیرمعمولی تیاری"

جنرل اتھارٹی فار پورٹس نے کہا ہے کہ یہ جہاز 2022ء میں سروس میں داخل ہوا اور فرانسیسی شپنگ لائن CMA CGM کے زیراہتمام کام کررہا ہے۔ اس جہاز کی آمد اس بات کا ثبوت ہے کہ سعودی بندرگاہوں میں اس طرح کے بحری جہازوں کی آمد ورفت کے لیے غیرمعمولی انتظامات کیے گئے ہیں۔

یہ تینوں براعظموں کے لیے ایک اہم لاجسٹکس سینٹر اور ایک مربوط مرکز کے طور پر مملکت کی پوزیشن کو بھی اجاگر کرتا ہے۔ یہ بحری جہاز دمام میں شاہ عبدالعزیز پورٹ کی مسابقتی صلاحیتوں کو بڑھاتا ہے۔ اس کے علاوہ یہ جہاز دو کنٹینر ٹرمینلز کے آپریٹر سعودی انٹرنیشنل پورٹس کمپنی "SGP"، ہائی ٹیک لاجسٹک آلات جو مختلف قسم کے سامان اور کنٹینرز کو سنبھالنے کے لیے اس کی آپریشنل صلاحیتوں کا ثبوت ہے۔

سعودی گرین انیشیٹو

یہ قدم سعودی گرین انیشی ایٹو کے اہداف کے مطابق اس قسم کے جہازوں کو چلانے کی حوصلہ افزائی کے طور پر سامنے آیا ہے۔ سعودی عرب 2030 تک سالانہ 278 ملین ٹن کاربن کے اخراج کو کم کرنا چاہتا ہے۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ جدہ اسلامک پورٹ پر 2021 میں فرانسیسی شپنگ لائن CMA CGM کا جہاز Jacques Saadeh لنگرانداز ہوا تھا جو دنیا کا پہلا اور سب سے بڑا کنٹینر بردار جہاز ہے جو مکمل طور پر LNG سسٹم کے ساتھ ماحول دوست مائع قدرتی گیس پر چلتا ہے۔ اس پر 23 ہزار کنٹینرز کی گنجائش ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں