مکہ مکرمہ: سنگین جرائم میں ملوث دہشت گرد کا سر قلم کردیا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی عرب کی وزارت داخلہ کی جانب سے کل منگل کو مکہ مکرمہ کے علاقے میں دہشت گردی کی کارروائی کے مرتکب ایک مجرم کا سر قلم کردیا گیا۔

وزارت داخلہ کا کہنا ہے کہ مجرم صالح بن سعيد بن علی الكربي تکفیری نظریات کا حامل تھا۔ اس کا تعلق دہشت گرد تنظیموں کے ساتھ رہا اور وہ ان کے لیے فنڈز ریزنگ بھی کرتا رہا ہے۔

سعودی وزارت داخلہ کے ایک بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ "مجرم نے اس کے ارتکاب سے پہلے الودیعہ کراسنگ اور شرورہ میں جنرل انویسٹی گیشن بلڈنگ پرکیے گئے دہشت گردانہ حملے اور اس میں شریک افراد کے بارے میں اس کی معلومات کو چھپا لیا۔" ملزم دہشت گردی کی کارروائیوں میں حصہ لینے کے لیے یمن میں گیا اور وہاں اس نے اسلحہ چلانے کی تربیت بھی حاصل کی۔

پولیس نے ملزم کو دہشت گردی کی کارروائیوں کے شبے میں گرفتار کرکے اس سے تفتیش کی۔ ملزم پر دہشت گردی کے واقعات کے ثبوت کے بعد اس کے خلاف مقدمہ چلایا گیا اور اسے سزائے موت سنائی گئی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں