ابھرے ہوئے کپڑے کو جوڑنا اور سنہری آیات لکھنا: غلاف کعبہ کی تیاری کے دس مراحل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
5 منٹس read

سعودی عرب میں منگل یا بدھ یعنی 18 یا 19 جولائی کو یکم محرم ہے۔ یکم محرم کو خانہ کعبہ شریف کا غلاف تبدیل کیا جائے گا۔ غلاف کعبہ کی تیاری کے لیے کنگ عبدالعزیز کمپلیکس غلاف کی بُنائی میں اپنی صلاحیتوں کو بروئے کار لانے اور اس بات کو یقینی بنانے کے لیے کام کر رہا ہے کہ یہ اعلیٰ ترین بین الاقوامی معیار کے مطابق ہو۔

ڈی سیلینیشن

غلاف کعبہ کی بنائی 10 صنعتی مراحل سے گزرتی ہے۔ جس کی شروعات "ڈی سیلینیشن" سے ہوتی ہے۔ خانہ کعبہ کے غلاف کے لیے بنائے گئے ریشم کو دھونے کے لیے استعمال ہونے والے پانی کے درجہ حرارت کو ایڈجسٹ کیا جاتا ہے۔ اس کے بعد ریشم بنانے کے لیے مخصوص تصریحات اور معیارات کے مطابق صاف کیے گئے پانی کو تیار کیا جاتا ہے۔

مصبغہ

دوسرے مرحلے کا آغاز "خضاب لگانے والی مشین" سے ہوتا ہے۔ اس مشین کو ’’مصبغہ‘‘ کہا جاتا ہے۔ اس مرحلے میں اعلی درجہ حرارت پر ریشم کی دھلائی ہوتی ہے۔ اس کی حفاظت کرنے والی مومی تہہ کو ہٹانے کا بھی مشاہدہ ہوتا ہے۔ اس مرحلے کو "سیریزین" کہا جاتا ہے۔

غلاف کعبہ پر ریشم کے دھاگے کے کام کا مرحلہ
غلاف کعبہ پر ریشم کے دھاگے کے کام کا مرحلہ

ریشم کی مطابقت

ریشم رنگنے سے قبل اور بعد میں ریشم کے بے ترتیب نمونے لیے جاتے ہیں۔ موسمی عوامل کے خلاف غلاف کعبہ کی مزاحمت اور تناؤ کی طاقت کو منظور شدہ تصریحات اور معیارات کے مطابق یقینی بنایا جاتا ہے۔ اس کے لیے ریشم کی مطابقت کی تصدیق کے لیے کئی ٹیسٹ کیے جاتے۔ چاندی کے تاروں اور سونے کے پانی سے لیپی گئی چاندی کے تاروں کی تفصیلات کو جانچنے کے لیے لیبارٹری میں جانچا جاتا ہے۔

خودکار ویونگ سیکشن

چوتھے مرحلے کو "خودکار ویونگ سیکشن" کہا جاتا ہے۔ اس میں غلاف کعبہ کئی مراحل سے گزرتا ہے۔ اس میں ریشم کے دھاگوں کو وارپس میں تبدیل کرنا شامل ہے جس میں 9.9 ہزار دھاگے فی میٹر ریشم پر مشتمل ہوتے ہیں۔ "وارپنگ" نامی ایک مخصوص مشین کے ذریعے دھاگوں کو مروڑنے والی مشینوں میں مطلوبہ تعداد کے ساتھ ویفٹ تھریڈز کے طور پر استعمال کیا جاتا ہے۔

قرآنی آیات کی طباعت کے لیے ریشمی کپڑا تیار کرنے اور بیلٹ میں استعمال ہونے والی سونے اور چاندی کی تاروں سے کڑھائی کرنے کے لیے یا تو ایک سادہ ریشم کی بُنائی والی مشین استعمال ہوتی ہے۔ ابھرے ہوئے دھاگوں کو "جیکوارڈ" مشین سے غلاف کعبہ میں نصب کیا جاتا ہے۔ روئی کی مشین میں تنے کے دھاگوں کو نصب کیا جاتا ہے تاکہ غلاف کعبہ کا استر تیار کیا جا سکے۔

پرنٹنگ

ریشمی کپڑے کے ٹکڑوں کو ٹھیک کرنے کے لیے پانچواں مرحلہ پرنٹنگ شروع ہوتا ہے۔ سادہ ریشمی کپڑے کے ٹکڑوں کو لکڑی کے مختلف سائز کے دو ٹکڑوں پر لگایا جاتا ہے۔ اسے "بُنا" کہا جاتا ہے۔ پھر قرآنی آیات چھاپی جاتی ہیں۔ خانہ کعبہ کی پٹی کے لیے "سلک سکرین" اور اس کے نیچے قرآنی آیات لکھی جاتی ہیں۔

غلاف کعبہ پر آیات قرآنی کی کڑھائی کا مرحلہ
غلاف کعبہ پر آیات قرآنی کی کڑھائی کا مرحلہ

ہاتھ سے کڑھائی کے اوزار کی تیاری

چھٹے مرحلے کو "ہاتھ سے کڑھائی کے اوزار کی تیاری" کہا جاتا ہے۔ اس مرحلے میں قرآنی آیات اور اسلامی نقشوں کو بھرنے کے لیے استعمال ہونے والے سوتی دھاگے تیار کیے جاتے ہیں۔ اسی مرحلے میں چاندی اور سونے سے ملمع چاندی کی تاروں کی تیاری انجام پاتی ہے۔

محکمہ گلڈڈ ایمبرائیڈری

ساتویں مرحلے کو "محکمہ گلڈڈ ایمبرائیڈری" کے نام سے جانا جاتا ہے۔ اس مرحلہ میں گارمنٹس انڈسٹری میں کام کرنے والے افراد قرآنی آیات اور اسلامی علامات پر کڑھائی کرتے ہوئے چاندی کی تاروں کو سونے کے پانی سے لپیٹ کر انہیں ٹھیک کرتے ہیں۔ آٹھواں مرحلہ میں غلاف کعبہ "کوالٹی یونٹ" میں داخل ہوجاتا ہے۔ مقصد اعلی ترین مطلوبہ معیارات کو حاصل کرنا اور تصریحات اور معیارات کی تعمیل کو یقینی بنانا ہے۔

سنہری آیات نصب کرنا

نویں مرحلے میں مزدور اور ماہرین غلاف کعبہ کو جوڑتے اور سلائی کرتے ہیں۔ یہاں کندہ شدہ کپڑے کو جوڑا جاتا ہے۔ ان پر سنہری آیات نصب کی جاتی ہیں۔ اسی طرح خانہ کعبہ کے دروازے کے پردے کو جوڑا جاتا ہے۔

غلاف کعبہ کو بُننا

غلاف کعبہ کو بُننے کا عمل دسویں مرحلے کے ساتھ اختتام پذیر ہوتا ہے۔ اس مرحلہ کی نمائندگی خانہ کعبہ پر غلاف کو چڑھانے کے ذریعہ ہوتی ہے۔ اس مرحلہ میں پرانے غلاف کعبہ کو اتار کر اسے نئے غلاف کعبہ سے بدل دیا جاتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں