یورپی فٹ بال کلب میں کھیلنے کا کوئی امکان نہیں، سعودی عرب بہتر ہے: رونالڈو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فٹ بال سٹار رونالڈو نے ’’مانچسٹر یونائیٹڈ‘‘ کلب کو چھوڑنے کے بعد دسمبر میں دو یا اڑھائی برس کے معاہدے کے لیے سعودی کلب ’’ النصر‘‘ کلب میں شمولیت اختیار کرلی ہے۔ رونالڈو نے اب کہا ہے کہ میں نے دیگر بہترین کھلاڑیوں کے لیے سعودی ٹیموں میں شامل ہونے کے لیے بھی راہ ہموار کی ہے۔ انہوں نے کہا میرے سعودی عرب آنے سے دیگر عالمی کھلاڑی بھی اس صحرائی ملک میں آنے پر توجہ دیں گے۔

38 سالہ پرتگال کے کپتان نے پیر کے روز پری سیزن فرینڈلی میں سیلٹا ویگو کے خلاف النصر کی کی پانچ کے مقابلے میں صفر گول سے شکست کے بعد بات کرتے ہوئے کہا کہ زیادہ تر یورپی لیگز زوال کا شکار ہیں۔

ای ایس پی این سے بات کرتے ہوئے رونالڈو نے کہا مجھے سو فیصد یقین ہے کہ میں کسی یورپی کلب میں واپس نہیں جاؤں گا ۔ میں 38 سال کا ہوں۔ یورپی فٹ بال نے بہت زیادہ معیار کھو دیا ہے۔ یورپ میں واحد درست اور اب بھی اچھا کام پریمیئر لیگ کر رہی ہے۔ یہ باقی تمام لیگوں سے آگے ہے۔

خیال رہے رونالڈو کے دیرینہ حریف میسی کو بھی سعودی عرب منتقل ہونے کے ساتھ منسلک کیا گیا تھا۔ تاہم ارجنٹائن کے ورلڈ کپ کے فاتح میسی نے ایم ایل ایس سائیڈ انٹر میامی کے ساتھ 2025 تک کا ایک معاہدہ کرلیا۔ رونالڈو نے کہا ہے کہ کہ سعودی لیگ ایم ایل ایس سے بہتر ہے۔ اب تمام کھلاڑی یہاں آ رہے ہیں، ایک سال میں مزید ٹاپ کھلاڑی سعودی عرب آئیں گے۔

کئی ہائی پروفائل کھلاڑیوں نے سعودی لیگ میں رونالڈو کی پیروی کی ہے۔ جن میں ریال میڈرڈ سے بیلن ڈی آر کے فاتح کریم بینزیما اور چیلسی سے این گولو کانٹے شامل ہیں ۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں