ٹی وی چینل پر صحافی اور سابق وزیر کے درمیان تلخ کلامی میدان جنگ میں تبدیل ہو گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ٹی وی چینلوں پر سیاسی ’معززین‘ کے درمیان تلخ کلامی براہ راست جھگڑے میں تبدیل ہونے کے واقعات اب معمول بنتے جا رہے ہیں۔ ایسا ہی ایک واقعہ لبنان میں ہوا جب ایک سابق فاضل وزیر اور ایک سینیئر صحافی ٹی وی پروگرام میں گفتگو کے دوران آپس میں الجھ پڑے۔

لبنان کے ایک ٹی وی چینل پر سابق وزیر اور صحافی کےدرمیان بحث ٹی وی شو کے دورا ن ہونے والی تکرار براہ راست لڑائی میں تبدیل ہوگئی۔ ٹی وی چینل کے پروگرام کے اس حصے کی ایک ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہو رہی ہے۔

یہ جھڑپ سابق وزیر وئام وھاب اور صحافی سائمن ابو فاضل کےدرمیان اس وقت ہوئی جب پروگرام میں صدر کے انتخاب کے حوالے سے رکاوٹوں پر بحث کی جا رہی تھی۔ اس معاملے پر بحث ایک تنازع کی شکل میں تبدیل ہوئی اور آخرکار دونوں میں جھڑپ ہو گئی۔

یہ صورت حال ایم ٹی وی چینل پر صحافی مارسیل غانم کے پیش کردہ پروگرام میں سامنے آئی۔ اس دوران پروگرام میں سابق وزیر اور ایک سینیئر صحافی شریک گفتگو تھے۔ گفتگو کرتے ہوئے سابق وزیر وئاب نے ابو الفاضل کے چہرے پر پانی کا گلاس پھینک دیا، جس سے صورتحال مزید بگڑ گئی۔ دونوں ’معزز‘ شخصیات آپس میں گتھم گتھا ہوگئی۔

صحافی ابو فاضل وکیل اور سیاسی تجزیہ کار جوزف ابو فاضل کے بھائی ہیں اور وہ چند منٹوں تک جاری رہنے والے جھگڑے کے نتیجے میں معمولی زخمی ہوئے تھے۔ اسٹوڈیو میں موجود دو نامہ نگاروں اور ان کے ساتھ موجود افراد کے منتشر ہونے پر ختم ہوا۔ تاہم، سٹوڈیو کے باہرسابق وزیر کے محافظوں نے ابو فاضل کو مارا تو اس کے بعد یہ معاملہ ایک قانونی شکل اختیار کرگیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں