فلسطین کا عالمی برادری سےآباد کاری میں ملوث تنظیموں کو دہشت گرد قرار دینے کا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فلسطینی وزارت خارجہ نے فلسطینی شہریوں کے خلاف اسرائیلی قابض فوج اور آبادکار ملیشیا کی خلاف ورزیوں اور جرائم کی مذمت کرتے ہوئے عالمی برادری سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ آبادکاری تنظیموں کو دہشت گردوں کی فہرست میں شامل کرے۔

فلسطینی وزارت خارجہ نے اپنی ویب سائٹ پر ایک سرکاری بیان میں کہا کہ "وزارت خارجہ قابض اسرائیلی فوج، منظم اور مسلح آباد کار ملیشیا اور ان کے دہشت گرد عناصر کی فلسطینی شہریوں، ان کے گھروں، جائیدادوں، زمینوں، مقدسات اور گاڑیوں کو جلانے کے گھناؤنے جرائم کی سخت ترین الفاظ میں مذمت کرتی ہے۔ آباد کار ملیشیا اور اسرائیلی فوج کی طرف سے منظم انداز میں مغربی کنارے میں فلسطینی شہریوں، ان کے گھروں، املاک، زمین، مقدسات اور گاڑیوں کو جلانے کے جرائم روز کا معمول بن چکے ہیں۔ اس کی تازہ مثال رام اللہ کے المغیر گاؤں میں یہودی آباد کاروں کی طرف سے فلسطینیوں کے خلاف نسل پرستانہ نعرے بازی، الظاھریہ میں زیتون کے پھل دار درختوں پر مشتمل ایک باغ کو تباہ کرنے، عوریف اور مغربی مزرعہ میں فلسطینیوں کے گھروں پر تباہ کن حملے ہیں جن میں فلسطینیوں کی جان ومال کو نقصان پہنچانے کی منظم کوشش کی گئی‘‘۔

وزارت خارجہ نے مزید کہا کہ " حکومت فلسطین ان جرائم اور خلاف ورزیوں کو اسرائیلی حکومت میں بین گویر اور سموٹریچ جیسے انتہا پسند وزراء کی قیادت میں اشتعال انگیزی کی مہم اور ہتھیار اٹھانے کی ان کی مسلسل اپیلوں کا عکاس سمجھتی ہے۔اسرائیلی فوج کی کسی بھی جارحیت کے بعد آباد کار فلسطینی شہریوں کو مزید کچلنے کے لیے مداخلت کرتے ہیں۔ ان کی املاک کو تباہ کرتے ہیں‘‘۔

بیان میں خبر دار کیا گیا ہے کہ اسرائیلی فوج کی وحشیانہ کارروائیاں اور آباد کاروں کے حملے غرب اردن میں انتقام کی آگ بھڑکا رہے ہیں جو کسی بھی وقت آتش فشاں بن کر پھٹ سکتے ہیں۔

فلسطینی وزارت خارجہ نے عالمی برادری سے مطالبہ کیا کہ وہ غرب اردن میں روزانہ کی بنیاد پر جاری اسرائیلی کارروائیوں اور آباد کاروں کے حملوں کا نوٹس لے اور آباد کاری میں ملوث مقامی اور بین الاقوامی تنظیموں کو دہشت گردی کی فہرست میں شامل کرے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں