اردن میں ایک شامی مزدور چاقو کے وار سے قتل، قاتل چند گھنٹوں کے اندر گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اردن کے پبلک سکیورٹی ڈائریکٹوریٹ کے میڈیا ترجمان کرنل عامر السرطاوی نے بتایا ہے کہ کریمنل انویسٹی گیشن اور شمالی عمان پولیس ڈائریکٹوریٹ کی جانب سے شامی شہریت کے حامل ایک ملازم اسماعیل الزعبی کے قتل اور ڈکیتی کی تحقیقات پر کامیاب پیش رفت کرتے ہوئے ملزم کو گرفتار کرلیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق گذشتہ روز شمالی عمان پولیس ڈائریکٹوریٹ کو ایک رپورٹ موصول ہوئی کہ دارالحکومت عمان کے علاقے ہاشمی میں ایک گیس اسٹیشن کے اندر کام کرنے والے شامی شہر پر اسٹیشن سے نکلنے سے قبل ایک نامعلوم شخص نے تیز دھار آلے سے حملہ کیا اور اسے قتل کرکے کے قبضے سے 58 ہزار دینار نقدی لوٹ لی۔

میڈیا ترجمان نے مزید کہا کہ واقعہ کی تحقیقات اور مجرم کی شناخت کے لیے سکیورٹی، کریمنل انویسٹی گیشن اور مجاز پولیس ڈائریکٹوریٹ سے ایک خصوصی تحقیقاتی ٹیم تشکیل دی گئی۔

ملنے والی رقم
ملنے والی رقم

قاتل کو گھنٹوں میں گرفتار کر لیا گیا

میڈیا ترجمان نے تصدیق کی کہ جمع کردہ شواہد اور معلومات کے ذریعے ٹیم چند گھنٹوں میں مجرم کی شناخت کرنے اور اس کی تلاش کے بعد اسے گرفتار کرنے میں کامیاب ہوگئی۔

اس سے پوچھ گچھ کرنے پر اس نے اعتراف کیا کہ وہ بھی پہلے گیس اسٹیشن پر کام کرتا تھا اور اس نے حملہ اور ڈکیتی کی منصوبہ بندی اس وقت کی تھی جب ملازم رقم کی منتقلی کر رہا تھا۔ مسروقہ رقم میں سے 51,000 دینار قبضے میں لے لیے گئے۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ اردن میں مجرم کی سزا قانون کے مطابق سزائے موت ہے کیونکہ اس نے قتل کے جرم کا ارتکاب سوچے سمجھے قتل کے ارادے سے کیا گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں