غزہ میں رومی عہد کے قبرستان میں کم از کم 125 قبروں کی دریافت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

فلسطینی وزارتِ نوادرات نے کہا ہے کہ "گذشتہ سال غزہ میں دریافت ہونے والے 2,000 سال قدیم رومی قبرستان پر کام کرنے والے ماہرین آثار قدیمہ کو کم از کم 125 ایسی قبریں ملی ہیں، جن میں زیادہ تر انسانی ڈھانچے اب بھی کافی حد تک اصل شکل برقرار رکھے ہوئے ہیں اور نایاب سیسے کے بنے ہوئے دو سنگی تابوت ملے ہیں۔

غربت زدہ فلسطینی علاقہ مختلف تہذیبوں کے لیے ایک اہم تجارتی مرکز رہا ہے۔ بائبل میں اس حقیقت کی غمازی مصر اور فلسطین کے ذکر کی صورت میں ملتی ہے۔ فلسطین کی تاریخ کا ذکر رومی بادشاہت اور صلیبی ادوار میں بھی ملتا ہے۔

ماضی میں، مقامی ماہرین آثار قدیمہ نے فنڈنگ کی کمی کی وجہ سے دریافت شدہ اشیاء کو دوبارہ دفن کر دیا تھا لیکن فرانسیسی تنظیموں نے اس جگہ کی کھدائی میں مدد کی ہے۔ مصری فنڈ سے چلنے والے ایک ہاؤسنگ پروجیکٹ پر کام کرنے والے تعمیراتی عملے نے یہ جگہ گذشتہ سال فروری میں دریافت کی تھا۔

فرانسیسی سکول آف بائبلیکل اینڈ آرکیالوجیکل ریسرچ کے ایک ماہر فاضل العوتول نے سائٹ پر خبر رساں ادارے رائٹرز کو بتایا کہ "فلسطین میں یہ پہلا موقع ہے کہ ہم نے ایک قبرستان دریافت کیا ہے جہاں 125 قبریں ہیں اور غزہ میں پہلی بار ایسا ہوا ہے کہ ہم نے سیسہ سے بنے دو سنگی تابوت دریافت کیے ہیں۔"

فاضل العوتول کی تنظیم، فرانس کی امدادی ایجنسی، پریمیئر ارجینس انٹرنیشنل کی مدد سے دریافتوں کے کام کی نگرانی کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ "دریافت شدہ دو میں سے ایک سنگی تابوت انگوروں اور دوسرا ڈولفن مچھلیوں کے نقوش سے مزین ہے۔"

انہوں نے مزید کہا کہ "آثار قدیمہ کے اس تاریخی مقام کو محفوظ کرنے کے لیے ہمیں فنڈز کی ضرورت ہے تاکہ تاریخ مٹ نہ جائے۔" العوتول نے کہا کہ "ہمیں امید ہے کہ یہ مقام ایک سیاحتی مرکز بن جائے گا جہاں دریافت شدہ اشیاء پر مشتمل ایک عجائب گھر ہو گا۔"

کم از کم 25 انجینئرز اور تکنیکی ماہرین اتوار کو خاصی گرمی کے باوجود کھدائی، مٹی صاف کرنے، اور ڈھانچوں کو محفوظ کرنے میں مصروف رہے۔ انہوں نے کچھ قبروں کے اندر سے ملنے والے مٹی کے برتنوں کے ٹکڑوں کو بھی جوڑا۔

غزہ کی وزارتِ نوادرات کے ڈائریکٹر جنرل، جمال ابو ریدا نے کہا، "یہ ایک فقید المثال بات ہے۔ اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ اس سرزمین میں فلسطینیوں کی جڑیں گہری ہیں اور وہ ہزاروں سال سے یہاں آباد ہیں۔"

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں