شام : دمشق میں سیّدہ زینب کے مزار کے نزدیک بم دھماکے میں متعدد افراد زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شام کے دارالحکومت دمشق کے مضافاتی علاقے میں یوم عاشور سے ایک روز قبل حضرت سیّدہ زینب رضی اللہ عنہا کے مزار کے قریب دھماکے میں متعدد افراد زخمی ہوگئے ہیں۔

ابتدائی اطلاعات کے مطابق دھماکا خیز مواد ایک ٹیکسی میں نصب کیا گیا تھا۔سرکاری ٹی وی الاخباریہ کا کہنا ہے کہ حضرت سیدہ زینب رضی اللہ عنہا کے مزار کے قریب مضافاتی علاقے میں دھماکے میں متعدد افراد کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں۔

برطانیہ میں قائم حزب اختلاف کی جنگ پر نظر رکھنے والی تنظیم شامی رصدگاہ برائے انسانی حقوق نے خبر دی ہے کہ دھماکے میں 10 افراد ہلاک یا زخمی ہوئے ہیں۔رصدگاہ کا کہنا ہے کہ ہلاک ہونے والوں میں ایک خاتون بھی شامل ہے اور اس کے تین بچّے زخمی ہوئے ہیں۔

الاخباریہ اور حکومت کے حامی میڈیا کی جانب سے شیئر کی جانے والی تصاویر میں دیکھا جا سکتا ہے کہ جلی ہوئی ٹیکسی کو فوجی وردیوں میں ملبوس افراد اور مردوں کی بڑی تعداد نے گھیر رکھا ہے۔علاقے میں واقع عمارتوں پرعاشورا محرم کی مناسبت سے سبز، سرخ اور سیاہ جھنڈے اور بینرزآویزاں تھے۔

سوشل میڈیا پر شیئر کی گئی ایک ویڈیو میں لوگ خون اور دھول میں لت پت دو افراد کو زمین پر لٹا کر مدد کے لیے پکار رہے ہیں۔ دھماکے سے آس پاس کی دکانوں کے شیشے ٹوٹ گئے تھے جبکہ ایک دکان میں آگ لگی ہوئی تھی۔

دمشق کے اس محلّے کا نام حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم کی نواسی سیّدہ زینب رضی اللہ عنہا کے نام پر رکھا گیا ہے۔

عاشورمحرم الحرام کا دسواں دن ہے جو شیعہ مسلمانوں کے مقدس ترین ایام میں سے ایک ہے۔ یہ ساتویں صدی عیسوی میں موجودہ عراق میں کربلا کے مقام پرجنگ میں پیغمبراسلام ﷺ کے نواسے حضرت امام حسین رضی اللہ عنہ اور ان کے 72 ساتھیوں کی شہادت کی علامت ہے۔ یوم عاشور محرم کے ماتمی جلوسوں کے عروج کی علامت ہے۔

یوم عاشور سے قبل سیّدہ زینب کے علاقے میں ہونے والا یہ دوسرا دھماکا ہے۔ منگل کے روز شام کے سرکاری میڈیا نے ایک پولیس اہلکار کے حوالے سے بتایا تھا کہ ایک موٹرسائیکل کے ساتھ نصب دھماکا خیز مواد کے پھٹنے سے دو شہری زخمی ہو گئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں