سعودی عرب اور بحرین کی اپنے شہریوں کو’مسلح تنازع‘کی وجہ سے لبنان چھوڑنے کی ہدایت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب اوربحرین نے لبنان میں مقیم اپنے اپنے شہریوں کو وہاں سے فوری طور پر نکل جانے کی ہدایت کی ہے اور انھیں کہا ہے کہ وہ مسلح تنازع کے علاقوں سے دور رہیں۔

بحرین کی وزارت خارجہ نے ایک بیان میں اپنے شہریوں پر زور دیا ہے کہ وہ ’’مسلح تنازع‘‘ کی وجہ سے لبنان چھوڑ دیں۔

اس سے قبل بیروت میں سعودی عرب کے سفارت خانہ نے سعودی شہریوں کو فوری طور پر لبنان کی حدود چھوڑنے کی ہدایت کی اوران سے کہا کہ وہ مسلح جھڑپوں والے علاقوں سے دور رہیں۔

سعودی پریس ایجنسی (ایس پی اے) کے مطابق سفارت خانے نے یہ بات زور دے کہی ہے کہ تمام شہری حکومت کے فیصلے کی پاسداری کریں تاکہ ان کی حفاظت کو یقینی بنایا جا سکے۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ "X" پر ایک بیان میں سفارت خانے نے شہریوں کو ہنگامی صورت میں رابطے کے لیے نمبر بھی فراہم کیے ہیں:

- 009611762711
- 009611762722

اس سے قبل یکم اگست کو برطانیہ نے لبنان کے لیے اپنی سفری ہدایت میں ترمیم کرتے ہوئے کہا تھا کہ جنوبی لبنان میں صرف انتہائی ضرورت کے تحت ہی سفر کیا جائے۔

لبنان کے جنوب میں واقع فلسطینی مہاجر کیمپ عین الحلوہ میں صدر محمود عباس کی جماعت فتح کے حامیوں اور دیگر گروپوں کے درمیان مسلح جھڑپوں کے نتیجے میں 13 افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

عین الحلوہ کیمپ لبنان میں فلسطینی مہاجرین کے بارہ کیمپوں میں سب سے بڑا ہے۔ اس کیمپ میں 80 ہزار سے ڈھائی لاکھ تک فلسطینی مہاجرین رہتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں