ایران میں خاتون سے زیادتی کے مجرم 5 افراد کو پھانسی دے دی گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایرانی عدلیہ کے ماتحت "میزان آن لائن" ویب سائٹ کے مطابق کل بدھ کو ایران نے ملک کے شمال مغرب میں مئی 2022 میں ایک خاتون کے ساتھ زیادتی کے مرتکب پانچ افراد کو پھانسی دے دی۔

ویب سائٹ نے کہا ہے کہ گزشتہ سال مئی میں ایک خاتون کو اغوا کرنے اور اس کے ساتھ زیادتی کرنے والے پانچ افراد کو مارند (شمال مغربی ایران) کے شہر میں پھانسی دے دی گئی۔

ایران میں پھانسی عام طور پر پھندے سے دی جاتی ہے۔

اسی ذریعے نے مزید کہا کہ "ملزمان، جن کا سابقہ مجرمانہ ریکارڈ تھا، کو جرم کے چار دن بعد گرفتار کر لیا گیا تھا۔"

جون کے شروع میں ایمنسٹی انٹرنیشنل نے کہا کہ ایران میں 2023 کے آغاز سے اب تک 282 افراد کو پھانسی دی جا چکی ہے، جو پچھلے سال کی اسی مدت کے دوران ریکارڈ کی جانے والی پھانسیوں کی تعداد سے "تقریباً دوگنا" ہے۔

ایمنسٹی انٹرنیشنل سمیت انسانی حقوق کی غیر سرکاری تنظیموں کے مطابق ایران نے 2022 میں 582 افراد کو پھانسی دی، جو چین کے علاوہ دنیا کے تمام ممالک میں سب سے زیادہ ہے۔

جولائی کے شروع میں عدلیہ نے ان تین مردوں کو پھانسی دینے کا اعلان کیا تھا جنہیں 2021 کے آخر میں تقریباً 10 خواتین کو نشہ آور اشیا دینے اور بیوٹی سیلون میں ان کے ساتھ عصمت دری کرنے کے جرم میں سزا سنائی گئی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں