لبنان کی حزب اللہ اور عیسائی قصبے کے رہائشیوں کے درمیان جھڑپیں، دو افراد ہلاک

حزب اللہ نے کہا کہ اس کا ایک ٹرک الٹنے کے بعد ایک مقامی "ملیشیا" کے لوگوں نے اس پر حملہ کیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

لبنان میں بدھ کی رات حزب اللہ اور ایک عیسائی قصبے کے رہائشیوں کے درمیان مسلح جھڑپوں میں کم از کم دو افراد ہلاک ہوئے۔

عینی شاہدین کے مطابق، مبینہ طور پر اسلحے سے بھرا ایک ٹرک کحالہ قصبے کے قریب ایک موڑ پر الٹ گیا، جہاں اسے مقامی لوگوں نے اسے گھیر لیا اور سڑک بلاک کر دی۔

خیال کیا جاتا ہے کہ یہ ٹرک ایران کی حمایت یافتہ حزب اللہ کا تھا، جس کا بعد میں اس گروپ نے دعویٰ کیا۔

حزب اللہ نے ایک بیان میں کہا کہ اس کا ایک ٹرک ،جس میں اسلحے کا کوئی ذکر نہیں تھا، بیروت جا رہا تھا جب راستے پر الٹنے کے بعد ایک مقامی "ملیشیا" کے ارکان نے حملہ کیا۔ گروپ کے مطابق، جھڑپوں کے دوران حزب اللہ کا ایک کارکن مارا گیا۔

ایک سکیورٹی ذریعے نے العربیہ انگلش کو بتایا کہ حزب اللہ کا ایک اور رکن اور ایک مقامی باشندہ بھی زخمی ہوا۔ ذرائع نے بتایا کہ ایک الگ فرد جس کے بارے میں خیال کیا جاتا ہے کہ وہ مقامی رہائشی اور کتائب پارٹی کا رکن بھی مارا گیا ہے۔

حزب اللہ سے وابستہ میڈیا نے فوری طور پر کتائب اور لبنانی افواج کو مورد الزام ٹھہرایا، جنہیں روایتی طور پر اس قصبے میں جہاں جھڑپیں ہوئیں وہاں وسیع حمایت حاصل رہی ہے۔

لبنانی نشریاتی اداروں الجدید اور ایم ٹی وی لبنان نے سادہ لباس میں مردوں کی گلیوں میں رائفلیں چلاتے ہوئے فوٹیج نشر کیں۔

نشریاتی اداروں نے بعد میں لبنانی فوج کے دستوں کو رات کے وقت تعینات دکھایا جبکہ ایک کرین اس سے لکڑی کے کریٹ ہٹانے کا کام کر رہی تھی۔

رہائشیوں کے بڑے ہجوم نے سڑک کو بند کردیا اور اب بھی آس پاس جمع ہیں۔

حزب اللہ ایک طاقتور جماعت ہے جس نے لبنان کی خانہ جنگی کے بعد اپنے طاقت کو برقرار رکھا۔

2020 کے بیروت پورٹ دھماکے کی تحقیقات کرنے والے جج کے خلاف حزب اللہ اور اس کے شیعہ اتحادی امل کی طرف سے نکالی گئی ریلی کے بعد لبنان کی خانہ جنگی کے ایک سابقہ فرنٹ لائن کے ساتھ جھڑپوں میں کم از کم سات افراد مارے گئے تھے۔

ایک ذریعے نے کہا کہ لبنانی فوج نے ٹرک کو گھیرے میں لے لیا، جس کے مواد کا پتہ نہیں چل سکا۔

دوسری جانب لبنانی حزب اللہ نے ایک بیان جاری کر کے اس واقعے کی وضاحت کرتے ہوئے کہا ہے کہ حزب اللہ کا ایک ٹرک وادی بقاع سے بیروت کی طرف آرہا تھا کہ جو کحالہ کے علاقے میں الٹ گیا۔

ٹرک الٹنے کے بعد علاقے میں موجود ملیشیا کے متعدد بندوق بردار جمع ہو گئے، اور انہوں نے ٹرک کو کنٹرول کرنے کی کوشش میں ٹرک کے اہلکاروں پر حملہ کر دیا۔ جب انہوں نے پتھر پھینکے اور پھر فائرنگ کی۔ فائرنگ سے متعدد افراد زخمی ہوئے جن میں سے دو کی موت واقع ہوگئی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں