ایران کے منجمد 10 ارب ڈالر بحال، واشنگٹن جلد ایرانی قیدیوں کو رہا کرے گا:ایران

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران نے دعویٰ کیا ہے کہ امریکا کے ساتھ طے پائے معاہدے کے تحت واشنگٹن جلد ہی ایرانی قیدیوں کو رہا کرے گا جب کہ معاہدے میں امریکا نے ایران کی منجمد کی گئی دس ارب ڈالر کی رقم بحال کرنے کا بھی فیصلہ کیا ہے۔

آج جمعہ کوایرانی وزارت خارجہ نے جنوبی کوریا میں منجمد ایرانی فنڈز کی بحالی کا عمل شروع کرنے کا اعلان کیا ہے۔

اسلامی جمہوریہ ایران کی نیوز ایجنسی (ارنا) نے وزارت خارجہ کے ایک بیان کا حوالہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ امریکا کے زیر حراست متعدد ایرانی قیدیوں کو جلد رہا کر دیا جائے گا۔

وزارت خارجہ نے کہا کہ فنڈز کی بحالی کے بعد منجمد فنڈز کے استعمال کے ذرائع تہران کے اختیار میں ہوں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ مجاز حکام ان کو خرچ کرنے کے عمل کو سنبھالیں گے کیونکہ وہ ملک کی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے موزوں سمجھتے ہیں۔

جمعرات کے روز ایران اور امریکا نے دونوں ممالک کے درمیان قیدیوں کے تبادلے اور جنوبی کوریا اور عراق میں 10 ارب ڈالر کے منجمد ایرانی فنڈز جاری کرنے کا معاہدہ کیا، جس میں عراق کے تجارتی بینک میں رکھے گئے فنڈز بھی شامل ہیں۔

ایرانی اور  امریکی جھنڈا
ایرانی اور امریکی جھنڈا

ایک باخبر ذریعے نے ’ارنا‘ کے ساتھ ایک خصوصی انٹرویو میں مزید کہا کہ جنوبی کوریا میں 6 بلین ڈالر کے منجمد فنڈز کو سوئٹزرلینڈ کے ایک بینک اور پھر قطر میں ایک ایرانی بینک اکاؤنٹ میں منتقل کیا جائے گا، تاکہ قیدیوں کی رہائی کےمعاہدے کے تحت تہران ان تک رسائی حاصل کر سکے۔

ذرائع نے کہا کہ معاہدے کے مطابق امریکی قیدیوں کو اس وقت تک رہا نہیں کیا جائے گا جب تک کہ ایرانی فنڈز مکمل طور پر قطر منتقل نہیں ہو جاتے۔

ایجنسی نے اپنے ذرائع کے حوالے سے بتایا کہ قیدیوں کا تبادلہ جن میں سے 5 ایران سے اور 5 امریکا سے ہیں قطر میں اس وقت ہو گا جب تہران قطر سے اپنی رقم واپس لینے کی صلاحیت کی تصدیق کر لے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں