تحریک فتح اور فلسطینی اتھارٹی کی صفوں میں بھونچال، 12 گورنر بہ یک وقت برطرف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

فلسطینی صدر محمود عباس نے تحریک فتح اور تنظیم آزادی فلسطین ‘پی ایل او‘ میں اس وقت ہلچل مچا دی جب انہوں نے حیران کن طور پر گذشتہ روز فلسطینی اتھارٹی کے کل 16 گورنرز میں سے 12 گورنروں کو برطرف کرنے کا اعلان کیا۔

صدر عباس نے ایک صدارتی حکم نامہ جاری کیا جس میں انہوں نے برطرفی کو "ریٹائرمنٹ" قرار دیا۔

ایوان صدر کے بیان کے مطابق اس فیصلے میں غزہ کی پٹی کے چھ میں سے چار گورنر شامل ہیں۔ ان میں شمالی غزہ کے گورنر صلاح احسان ابو وردہ، غزہ کے گورنر ابراہیم ابو النجا، خان یونس کے گورنر احمد الشیبی اور رفح احمد نصر شامل ہیں۔

12 جولائی (ای پی اے) صدر محمود عباس کے دورے کے دوران جنین کیمپ میں فلسطینی سیکیورٹی فورسز
12 جولائی (ای پی اے) صدر محمود عباس کے دورے کے دوران جنین کیمپ میں فلسطینی سیکیورٹی فورسز

مغربی کنارے میں برطرف کیے جانے والے گورنروں میں جنین کے اکرم رجوب، نابلس کے گورنر ابراہیم رمضان، قلقیلیہ کے رفیق توفیق رواجنہ، طولکرم کے گورنر عصام ابوبکر، بیت لحم کے کامل حمید، الخلیل الحبرین کے حبرین الیاس البکری، طوباس کے یونس ابراہیم العاص، اور اریحا اور وادی اردن کے گورنر جہاد علی ابو العسل شامل ہیں۔

محمود عباس نے صدارتی کمیٹی بنانے کا حکم بھی جاری کیا۔ اس میں "متعدد سرکردہ شخصیات کو شامل کیا جائے گا جو گورنروں کے خالی ہونے والے عہدوں پر موزوں افراد کےتقرر میں صدر کی ہدایات کی روشنی میں کام کریں گی۔

عملی طور پر صرف یروشلم کے گورنر عدنان غیث، رام اللہ اور البیرہ کے گورنر لیلیٰ غانم اور سلفیت کے گورنر عبداللہ کامل اپنے عہدے پر فائز ہیں۔ جب کہ دیر البلح میں کوئی گورنر نہیں ہے۔ گورنر ڈاکٹر عبداللہ سمھدانہ کی 2020ء میں موت کے بعد یہ عہدہ خالی پڑا ہے۔

اسرائیلی فوجیوں نے یروشلم کے گورنر عدنان غیث کی عدالت میں نظر بندی میں توسیع کی (وفا)
اسرائیلی فوجیوں نے یروشلم کے گورنر عدنان غیث کی عدالت میں نظر بندی میں توسیع کی (وفا)

خیال رہے کہ فلسطینی اتھارٹی کے زیر انتظام 16 گورنریاں ہیں جن کی ذمہ داری میں قصبے، دیہات، کیمپ، کھنڈرات اور بدو بستیاں ہیں۔ ہر گورنری کی سربراہی صدر کے ذریعہ مقرر کردہ گورنر کرتا ہے، جو عام طور پر سابق فوجی اہلکاروں میں سے ہوتا ہے۔

گورنر انتظامیہ، صحت عامہ، سماجی خدمات، تعلیم، سیاحت، نوادرات، عوامی کام، رہائش، نقل وحمل اور مواصلات، اندرونی تجارت، زراعت، صنعت، عوامی سلامتی، نظم و ضبط اور عوامی اخلاقیات کو برقرار رکھنے، اور عوامی آزادیوں کے تحفظ کا ذمہ دار ہے۔

محمود عباس اور اسماعیل ھنیہ نے گزشتہ ماہ انقرہ میں ترک ایوان صدر میں اردگان (ترک ایوان صدر) کی موجودگی میں ملاقات کی تھی۔
محمود عباس اور اسماعیل ھنیہ نے گزشتہ ماہ انقرہ میں ترک ایوان صدر میں اردگان (ترک ایوان صدر) کی موجودگی میں ملاقات کی تھی۔

فلسطینی اتھارٹی کی گورنریوں کی آبادی تقریباً 50 لاکھ تک پہنچ گئی ہے۔ اگرچہ ہر گورنر کو صدر کا نمائندہ سمجھا جاتا ہے، لیکن اسرائیل نے یروشلم کے گورنر عدنان غیث کو کئی مہینوں سے نظر بند کر رکھا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں