معاشی بحران کی وجہ سے لبنان ٹی وی چینل کی نشریات بند

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

لبنان کے وزیر اطلاعات زیاد مکاری نے کل جمعہ کی صبح ایک بیان میں لبنان ٹی وی چینل کی نشریات بند کرنے کا اعلان کیا۔

ٹی وی چینل کی بندش کی وجہ معاشی بحران بتائی جاتی ہے کیونکہ انتظامیہ کی جانب سے ملازمین کی تنخواہوں کی ادائی کی تمام تر کوششوں کے باوجود چینل کی نشریات کو چلایا نہیں جا سکا، تنخواہوں کی عدم ادائیگی کی وجہ سے بہت سے ملازمین پہلے ہی کام چھوڑ چکے ہیں۔

وزارت خزانہ کے ٹریژری ڈائریکٹوریٹ نے اعلان کیا کہ اس نے لبنان ٹیلی ویژن کے کارکنوں کو مئی، جون کے مہینوں کے لیے عارضی معاوضے کی ادائیگی کے لیے رقم کی ادائیگی کے طور پر جولائی 2023ء میں لبنان بنک کی طرف سے رقم منتقل کی گئی تھی۔

لبنان کی سرکاری ٹیلی ویژن کمپنی کا موقف

لبنان کی سرکاری ٹیلی ویژن کمپنی ’Télé Liban‘ نے اس پیش رفت کو مالی بحران کا شاخسانہ قرار دیا ہے۔ یہ کمپنی سنہ1977ء میں دو کمپنیوں لبنانی ٹیلی ویژن کمپنی اور لیونٹ اینڈ لبنان ٹیلی ویژن کمپنی کے انضمام سے قائم ہوئی تھی۔

لبنان ٹی وی
لبنان ٹی وی

یہ دونوں کمپنیاں دنیا کی قدیم ترین ٹیلی ویژن کمپنیوں میں شمار کی جاتی ہیں۔ عرب خطہ ٹیلی ویژن پروڈکشن یہ کمپنی تھی جس نے عربی ڈرامہ تیار کیا تھا جو خانہ جنگی سے پہلے عرب دنیا میں پھیل گیا تھا، لیکن جنگ کے آغاز کے ساتھ ہی اس کی پیداواری صلاحیت میں کمی آئی اور جنگ کے بعد غائب ہو گئی۔

لبنان اور لیونٹ ٹیلی ویژن کمپنی کی عمارت 1961 میں بیروت کے نواحی علاقے ہزمیہ میں تعمیر کی گئی تھی۔ یہ "چینل 11" کے نام سے جانا جاتا تھا، جو عربی میں نشر یات ہیش کرتا اور اس کے زیادہ تر شیئر ہولڈر فرانسیسی تھے۔

ایڈورٹائزنگ مارکیٹ

تنگ اشتہاری منڈی نے دونوں کمپنیوں کو زیادہ دیر تک چلنے سے محروم کردیا۔ اس لیے انہوں نے نقصانات کو کم کرنے کے لیے 1974ء میں نیوز بلیٹن کو ضم کر دیا اور 1977ء میں لبنان میں خانہ جنگی کی وجہ سے معاشی حالات خراب ہونے کے بعد دونوں کمپنیاں آخر کار ضم ہو گئی۔ نئی کمپنی کا نام "لبنان ٹی وی" رکھا گیا اور لبنانی ریاست نے اس کے 51 فیصد حصص خریدے اور اسے 2012 تک لبنان میں خصوصی طور پر ٹیلی ویژن چینلز کا استعمال کرنے کا حق دیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں