ایران کو ملنے والی رقم سے دہشت گرد پراکسی فائدہ اٹھائیں گے: نیتن یاھو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی وزیراعظم نے امریکا اور ایران کے درمیان قیدیوں کے تبادلے اور ایران کی منجمد رقم کی بحالی پر سخت تشویش کا اظہار کیا ہے۔

ہفتے کی شام اسرائیلی وزیر اعظم بنجمن نیتن یاہو نے ایرانی جوہری پروگرام کے حوالے سے امریکا پر کڑی تنقید کی۔

نیتن یاہو کے دفتر نے اسرائیلی وزیر اعظم کے حوالے سے کہا کہ "ایران کے جوہری ڈھانچے کو ختم نہ کرنے والے معاہدے تہران کے جوہری پروگرام کو وسعت دینے کا باعث بنیں گے۔"

اسرائیل کے "i24" چینل کی طرف سے اپنی ویب سائٹ پر شائع ہونے والی خبر کے مطابق نیتن یاہو نے امریکا اور ایران کے درمیان ہونے والے ایک معاہدے کے بارے میں رپورٹ ہونے والی باتوں پر سخت تنقید کی، جس کے تحت اسلامی جمہوریہ کو پابندیوں میں نرمی کے بدلے اپنے یورینیم کی افزودگی کے پروگرام کو سست کرنےپر اتفاق کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ یہ ایران کی واگزار کی گئی رقم تہران کے دہشت گرد پراکسیوں اور ایجنٹوں کے پاس جائے گا۔

اسرائیلی چینل نے جمعہ کے روز ’وال اسٹریٹ جرنل‘ کے حوالے سے کہا کہ ایران نے افزودہ یورینیم کے ذخیرہ کرنے کی رفتار کو "نمایاں طور پر" سست کر دیا ہے اور ساتھ ہی ساتھ اس کے ذخیرے کو بھی کم کر دیا ہے۔ س معاہدے میں تہران حکومت کی طرف سے چار امریکی شہریوں کی رہائی بھی شامل ہے جنہیں تہران میں جبری طور پر نظربند کیا گیا ہے۔

دو اسرائیلی حکام نے نیویارک ٹائمز کو بتایا کہ ایسا لگتا ہے کہ امریکا اور ایران کے درمیان وسیع معاہدے موجود ہیں۔

دونوں امریکی اخبارات نے ایران کے جوہری پروگرام پر مذاکرات دوبارہ شروع کرنے کا عندیہ دیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں