سعودی خاتون رنرنے 100 میٹر ورلڈ چیمپئن شپ کے لیے کوالیفائی کرلیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی سپرنٹر اور قومی ٹیم کے کھلاڑی یارا ابو الجدایل نے رواں اگست میں ہنگری کے دارالحکومت بوڈاپیسٹ کی میزبانی میں ہونے والی عالمی ایتھلیٹکس چیمپئن شپ میں 100 میٹر کی دوڑ میں شرکت کے لیے کوالیفکیشن کارڈ جیت لیا۔

وسیع پیمانے پر تیاریاں

ابو الجدایل جنہوں نےحمدان البیشی کے زیر نگرانی ٹریننگ لی نے گذشتہ مئی سے اس ایونٹ کی تیاری جاری رکھی ہوئی ہے۔ مراکش میں ہونے والی عرب چیمپئن شپ، الجزائر میں ہونے والے عرب گیمز اور اسپین میں دوڑ کے لیے ہونے والے مقابلوں میں بھرپور شرکت کی۔

اس کا مقصد اگلی عالمی چیمپئن شپ میں اپنے ریکارڈ کو توڑنا اور دنیا کے بہترین کھلاڑیوں کے ساتھ مقابلہ کرنا ہے۔

ایتھلیٹکس فیڈریشن نے "ایکس " پلیٹ فارم پر اپنے آفیشل اکاؤنٹ پر جدایل کی حوصلہ افزائی کرتے ہوئے "گڈ لک چیمپئن" کے الفاظ سے اس کو مبارک باد پیش کی ہے۔

جدایل کا پہلا مقابلہ

سعودی عرب کی رنر ابو الجدایل کی شرکت عالمی چیمپئن شپ کی سطح پر پہلی ہے کیونکہ وہ اس سے قبل 15ویں عرب اسپورٹس چیمپئن شپ جیسے دیگر ٹورنامنٹس میں شرکت کر چکی ہے اور 200 میٹر پر چھٹے نمبر پر سیمی فائنل تک پہنچی ہے جب کہ 400 میٹر کی ریس میں وہ کواٹر فائل میں پہنچ چکی ہے۔

اس نے 2018ء کے ایشین گیمز میں سعودی عرب کی نمائندگی کرنے والی خواتین کی ٹیم میں بھی حصہ ڈالا اور اس وقت 100 میٹر کی دوڑ کا ریکارڈ توڑا اور کنگڈم چیمپئن شپ میں شامل ہو کر 3 گولڈ میڈل جیتے۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ یارا ابو الجدایل نے گذشتہ اپریل میں قطری دارالحکومت دوحا میں اختتام پذیر ہونے والی ویسٹ ایشین چیمپئن شپ میں شرکت کرنے والی سعودی قومی ٹیم کی فہرست میں خود کو ایتھلیٹکس چیمپئن کے طور پر منوا لیا تھا۔

سعودی عرب میں خواتین کے کھیلوں میں تیزی دیکھی جا رہی ہے، خاص طور پر حالیہ دنوں میں کھیلوں کی سرگرمیوں میں خواتین کی شرکت میں اضافہ ہوا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں