عراق میں آگ برساتا سورج ’موت‘ بن چکا، ستمبر تک درجہ حرار50 درجے رہنے کی پیش گوئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

عراق میں اتوار اور پیر کو شدید گرمی کی لہر دیکھنے میں آئی۔ دارالحکومت بغداد میں درجہ حرارت 50 ڈگری سینٹی گریڈ تک پہنچ گیا۔ جس نے روزمرہ کی زندگی کو مزید مشکل بنا دیا ہے۔ گھر سے باہر کام کاج کرنے والوں کے لیے زندگی اجیرن ہو کر گئی ہے۔

خبر رساں ایجنسی "اے ایف پی" نے پیر کے روز عراقی محکمہ موسمیات کے ترجمان عامر الجابری کے حوالے سے بتایا ہے کہ اتوار اور پیر کو دارالحکومت بغداد میں درجہ حرارت پچاس ڈگری سینٹی گریڈ تک پہنچ گیا۔

پیر کے روز سب سے زیادہ درجہ حرارت ملک کے جنوب میں سماوہ، ناصریہ، دیوانیہ اور نجف کے علاقوں میں 51 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا۔

حکومت نے ذی قار اور دوسری جنوبی گورنریوں میں سرکاری ملازمین کے اوقات کار میں کمی ہے۔

عہدیدار نے توقع ظاہر کی کہ آنے والے دنوں میں درجہ حرارت میں قدرے کمی واقع ہوگی۔ تاہم عراق میں ستمبر کے آخر تک درجہ حرارت بلند رہے گا۔

تیل کی دولت سے مالا مال اس ملک میں بجلی کا شعبہ زبوں حالی کا شکار ہے۔بجلی کا شعبہ دن میں صرف چند گھنٹے بجلی فراہم کرتا ہے۔ جنریٹرز کا کچھ سہارا بھی لیکن اس کی سالانہ فیس بہت زیادی ہےجو بعض اوقات ایک خاندان کے لیے 100 ڈالر ماہانہ تک پہنچ جاتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں