ہم ڈیجیٹل تبدیلی کے میدان میں ایک پائیدار نظام قائم کرنے کے لیے کام کررہے ہیں:آرامکو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
7 منٹس read

سعودی عرب کی کی قومی پٹرولیم کمپنی ’آرامکو‘ ڈیجیٹل ٹیکنالوجیز کے استعمال میں توانائی کی صف اول کی کمپنیوں میں سے ایک بننے کے لیے کوشاں ہے کیونکہ اس کا مقصد دنیا کی توانائی کی ضروریات کو پورا کرنے والے تکنیکی حل پر عمل درآمد کرنا ہے۔ کمپنی کاربن فوٹ پرنٹ کو کم کرنے اور کاربن ڈائی آکسائیڈ کے اخراج کو کم کرنے نیز ایندھن کی کارکردگی میں اضافہ اور پانی کو محفوظ رکھنے میں مدد فراہم کرنے کےلیے کام کررہی ہے۔

’آرامکو‘ میں ڈیجیٹلائزیشن اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کے سینیر نائب صدر نبیل النعیم نے ’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ کو دیئے گئے انٹرویو کہا کہ اس شعبے میں ہونے والی ہر پیش رفت ڈیجیٹل اختراع کے لیے وقف ہمارے مراکز کے ذریعے کی گئی ہے۔ کمپنی کے ڈیجیٹل تبدیلی کے عمل میں اس مرکز نے اہم کردار ادا کیا ہے۔ نئی ٹیکنالوجیز متعارف کرانے کے ساتھ مناسب ماحول اور ضروری وسائل جو ہم نئے ڈیجیٹل حل تیار کرنے کے لیے اختراع کاروں اور کاروباری افراد کو فراہم کرتے ہیں فراہم کیے۔

ڈیجیٹل تبدیلی پروگرام

ایک سوال کے جواب میں نبیل النعیمی نے کہا کہ ہم نے سنہ 2017ء میں کمپنی کی جانب سے شروع کیے گئے ڈیجیٹل ٹرانسفارمیشن پروگرام میں حوصلہ افزائی کے ثمرات حاصل کرنا شروع کردیے ہیں کیونکہ پراسیسڈ تیل کے فی بیرل توانائی کے استعمال میں تقریباً 14.5 فیصد کمی ہوئی، گرین ہاؤس گیسوں کے اخراج میں 3.8 فیصد تک کمی واقع ہوئی اورغیر طے شدہ دیکھ بھال کے اخراجات کو تقریباً 20 فیصد کم کرنے میں مدد ملی۔

کمپنی کے کاروبار پر اثر انداز ہونے والے تین تین عوامل

آرامو کے کارو بار پر اثرانداز ہونےوالے تین عوامل کے بارے میں بات کرتے ہوئے النعیمی نے کہا کہ کیمروں، تھرمل امیجنگ ڈیوائسز اور گیس ڈیٹیکٹر سے لیس روبوٹس اور سمارٹ ڈرونز کے استعمال نے روایتی فیلڈ انسپیکشن ٹورز پر انحصار کم کیا ہے، جس سے ہماری کاروباری ٹیموں کی کارکردگی، حفاظت اور فیصلہ سازی کی صلاحیت کو بہتر بنانے میں مدد ملی ہے۔ مثال کے طور پر روبوٹ اور ڈرون اب بقیق پلانٹ میں ہمارے معمول کے تقریباً 30 فیصد کام انجام دیتے ہیں۔

مصنوعی ذہانت سے چلنے والی مشین لرننگ تکنیکوں اور الگورتھم کے تعارف نے ہمیں خام تیل کے ارتکاز کے عمل کی مسلسل فعال ڈیجیٹل ٹیوننگ کرنے کے قابل بنایا، جس کے نتیجے میں کارکردگی کی سطح کو بہتر بنانے اور مصنوعات کے معیار کی یکسانیت میں اضافہ ہوا۔اس کی وجہ سے مصنوعات کے معیار میں اضافہ ہوا اور 2019 کے بعد سے بجلی کی پیداوار کی کارکردگی میں تقریباً 4.5 فیصد بچت کی گئی۔

تیسرا عامل ڈیٹا ، جزیاتی ٹولز اور پیشین گوئی کرنے والے ماڈل کا استعمال کرتے ہوئے ہمارے انجینیرز زیادہ مؤثر طریقے سے سسٹم کے ممکنہ مسائل اور ناکامیوں کی پیشین گوئی کرنے کے قابل ہوئے۔ اس سے کارکردگی اور معیار کو بڑھانے میں مدد ملی۔

سعودی آرامکو ڈیجیٹل تبدیلی کے میدان میں ایک پائیدار نظام قائم کرنے کے لیے کیسے کام کرتی ہے؟

انہوں نے کہا کہ یقینی طور پر بڑے پیمانے پر ڈیجیٹل تبدیلی کو لاگو کرنے میں کامیابی کے لیے تعلیم اور تربیت پر بہت زیادہ توجہ دینے کی ضرورت ہے، جو کہ سعودی آرامکو کمپنی کے اندر فراہم کردہ تربیت سمیت متعدد اقدامات کے ذریعے ہو رہی ہے۔ اس کا مقصد ملازمین کو علم اور مہارت فراہم کرنا ہے۔ چوتھے صنعتی انقلاب کی ٹیکنالوجیز سے مستفید ہونے کے لیے ضروری ہے کہ یہ دنیا بھر کے اعلی درجے کے اداروں میں بیرونی کورسز کے ذریعے آرامکو میں کام کرنے والے ملازمین کی صلاحیت کو بڑھایا جائے۔

سعودی آرامکو میں ڈیجیٹلائزیشن اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کے سینئر نائب صدر نبیل النعیم
سعودی آرامکو میں ڈیجیٹلائزیشن اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کے سینئر نائب صدر نبیل النعیم

انہوں نے کہا کہ ہمارے پاس بقیق میں واقع چوتھے صنعتی انقلاب کی ٹیکنالوجیز کے لیے ایک مربوط مرکز بھی ہے، جسے ہم نے مختلف شعبوں اور اندرونی نظم و نسق کے درمیان علم کے تبادلے کو فروغ دینے کے مقصد سے قائم کیا ہے۔ یہ اس مرکز کی جانب سے پیش کیے جانے والےممکنہ مواقع سے فائدہ اٹھانے کا بہترین موقع ہے۔

توانائی کے شعبے کے کاروبار کو ترقی دینے اور مستقبل کی ضروریات کے لیے تیاری میں

ڈیجیٹلائزیشن کا کیا کردار ہے؟

جب ہم توانائی کی پیداوار کی تاریخ پر نظر ڈالتے ہیں تو ہمیں معلوم ہوتا ہے کہ ایک صدی سے زائد عرصے سے تیل اور گیس کے شعبے نے دنیا کی معاشی تبدیلی میں اہم کردار ادا کیا ہے۔ یہ شعبہ ایک نئے دور میں داخل ہونے والا ہے جس کے دوران ڈیجیٹل تبدیلی عملی کارکردگی کو بڑھانے، کام کی جگہ کی حفاظت کے ساتھ ساتھ اس شعبے کے لیے زیر اثر کاربن کو کم کرنے میں معاون ہے۔

جدت اور ڈیجیٹائزیشن کے نظام کی وسیع ترقی کے ساتھ چوتھے صنعتی انقلاب کی ٹیکنالوجیز نے توانائی سمیت عالمی معیشت کو نئی شکل دینا شروع کر دی۔ یہ تیل اور گیس کے شعبے کو بھی ایک نئے دور کی طرف لے جا رہا ہے۔ اس میں ڈیٹا پر مبنی ٹیکنالوجیز ایک اہم کردار ادا کرتی ہیں۔ فیصلہ سازی میں اہم کردار مصنوعی ذہانت، بڑے ڈیٹا اور تجزیاتی ٹولز سے لے کر ڈرونز، (بلاک چین) اور انٹرنیٹ آف تھنگز تک متعدد معروف ٹیکنالوجیز کے استعمال کے ذریعے پروجیکٹس ڈیٹا پر مبنی بصیرت سے فائدہ اٹھا سکتے ہیں۔ نئے چیلنجوں کا فوری جواب دے سکتے ہیں، اپنی پیداواری کارکردگی کو بڑھا سکتے ہیں۔

مصنوعی ذہانت کے شعبے میں سعودی آرامکو کی سب سے نمایاں سرمایہ کاری کیا ہیں؟

درحقیقت چوتھے صنعتی انقلاب کی ٹیکنالوجیز کو لاگو کرنا اب کوئی آپشن نہیں ہے کیونکہ اس وقت ہم جس ڈیجیٹل معیشت کا مشاہدہ کر رہے ہیں، اس کی روشنی میں کمپنیوں کو اپنے کاروبار کو بہتر بنانے کے لیے اس ٹیکنالوجی سے فائدہ اٹھانے کی اپنی صلاحیت کو ثابت کرنا ہو گا۔ ان کے شعبے بدلتے ہوئے مارکیٹ کی حرکیات کے ساتھ رفتار برقرار رکھنے اور مسابقتی فائدے کو برقرار رکھنے کے لیے جدید علوم اور تیکنیکس سے فائدہ اٹھانا ہوگا۔

سعودی آرامکو ویلیو چین کے تمام مراحل میں چوتھے صنعتی انقلاب کی ٹیکنالوجیز سے فائدہ اٹھانا چاہتی ہے جس کا مقصد جہاں بھی ممکن ہو کاروباری شعبوں میں بہتر نتائج حاصل کرنا ہے۔ اس میں آپریشنل کارکردگی، لاگت سے بچنا، گاہک کا اطمینان، اور تجارتی مارکیٹنگ کے ذریعے آمدنی پیدا کرنا شامل ہے۔

سعودی آرامکو نے اس سے قبل الیکٹرانک صلاحیت کی تبدیلی کو فروغ دینے کے لیے (مصنوعی ذہانت کے لیے عالمی راہداری) کا آغاز کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں