ماحولیاتی سرگرمیوں کی آڑ میں حزب اللہ کی حمایت کرنیوالی تنظیم پر امریکی پابندیاں

لبنانی ایسوسی ایشن "گرین ودآؤٹ بارڈرز" اور اس کے ڈائریکٹر زہیر نحلہ نے بلیو لائن کے ساتھ جنوبی لبنان میں حزب اللہ کی کارروائیوں کے لیے کور فراہم کیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

امریکی محکمہ خزانہ نے لبنان کی "گرین ودآؤٹ بارڈرز" ایسوسی ایشن اور اس کے ڈائریکٹر زہیر نحلہ کے خلاف حزب اللہ کی حمایت کرنے پر پابندیوں کا اعلان کردیا۔ امریکی وزارت خزانہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ایسوسی ایشن نے گزشتہ دہائی کے دوران لبنان اور اسرائیل کو الگ کرنے والی بلیو لائن کے ساتھ جنوبی لبنان میں حزب اللہ کی کارروائیوں کے لیے "سپورٹ اور کور" فراہم کیا ہے۔

امریکی وزارت خزانہ نے مزید کہا کہ انجمن ماحولیاتی سرگرمی کی آڑ میں عوامی طور پر کام کرتی ہے۔ امریکی محکمہ خارجہ نے اپنی ویب سائٹ پر کہا ہے کہ لبنانی "گرین ودآؤٹ بارڈرز" ایسوسی ایشن پر پابندیاں عائد کرنے کا مقصد لبنان، اسرائیل اور دنیا بھر میں دہشت گرد حملوں کے لیے کسی بھی مادی حمایت کو روکنا ہے۔

سٹیٹ ڈپارٹمنٹ کے بیان میں کہا گیا ہے کہ امریکہ دہشت گرد نیٹ ورکس کی فنڈنگ اور وسائل کو روکنے کے لیے کام کرنے کے لیے پرعزم ہے۔ ہم ان نیٹ ورکس کی طرف سے ملکی اور بین الاقوامی سطح پر لاحق خطرات کا مقابلہ کرتے رہیں گے۔

وزارت خارجہ نے ایک بیان میں کہا کہ یہ ایسوسی ایشن درحقیقت بلیو لائن کے ساتھ حزب اللہ کی سرگرمیوں کو پردہ فراہم کر رہی ہے۔ درجنوں پوائنٹس پر ایسوسی ایشن کے ارکان کے ذریعہ حزب اللہ کی سائٹس چلا رہے ہیں۔

بیان میں اشارہ کیا گیا کہ یہ مقامات زیر زمین گوداموں اور سرنگوں کو چھپائے ہوئے ہیں جن میں حزب اللہ گولہ بارود ذخیرہ کرتی ہے۔ پارٹی اپنے ارکان کو ہتھیاروں کی تربیت اور گشت کرنے کے لیے بھی ان مقامات کا استعمال کرتی ہے۔

وزارت نے اپنے بیان میں کہا کہ 2013 کو اپنے قیام کی تاریخ سے ’’گرین ودآؤٹ بارڈرز‘‘ نے حزب اللہ کی سرگرمیوں کی حمایت کے لیے اپنے وسائل کا استعمال کیا ہے۔ وہ باضابطہ طور پر اس کی تعمیراتی کمپنی سے منسلک ہے۔ حزب اللہ اور گرین وداؤٹ کے درمیان تعاون کا میڈیا پر بتایا گیا ہے۔

پابندیوں میں "گرین وِد آؤٹ بارڈرز" ایسوسی ایشن کے سربراہ زہیر نحلہ بھی شامل ہیں جنھوں نے وزارت کے مطابق اعتراف کیا کہ ان کی غیر سرکاری تنظیم کا کردار حزب اللہ کے تحفظ کے لیے دیوار فراہم کرنا ہےاور یہ کہ ان کا اور گرین ودآؤٹ بارڈرز ایسوسی ایشن کا تعلق حزب اللہ سے ہے۔

امریکی پابندیوں کے تحت امریکہ میں ’’ گرین ود آؤٹ بارڈرز‘‘ اور اس کے سربراہ زہیر نحلہ کے اثاثوں کو منجمد کردیا جائے گا۔ اس کے علاوہ کسی بھی امریکی شہری یا ادارے کو ان کے ساتھ تجارتی تبادلہ کرنے کی اجازت نہ ہوگی۔

یاد رہے اپنی آفیشل ویب سائٹ کے مطابق گرین ودآؤٹ بارڈرز ایک غیر سرکاری تنظیم ہے جو درخت لگانے کے لیے وقف ہے۔ جہاں تک اس کے مقاصد کا تعلق ہے یہ ماحولیاتی اور زرعی تعلیم کے گرد گھومتے ہیں۔

تاہم 2019 میں اسرائیل نے کہا تھا کہ ایسوسی ایشن ایک ایسا محاذ ہے جس نے حزب اللہ کو ستمبر میں ایویویم آپریشن میں اپنی سائٹس استعمال کرنے کی اجازت دی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں